وہ ظالم باغی رہنما جس نے خواتین کے جسم کا اہم حصہ کاٹ کر انہیں اس کو کھانے پر مجبورکر دیا

وہ ظالم باغی رہنما جس نے خواتین کے جسم کا اہم حصہ کاٹ کر انہیں اس کو کھانے پر ...
وہ ظالم باغی رہنما جس نے خواتین کے جسم کا اہم حصہ کاٹ کر انہیں اس کو کھانے پر مجبورکر دیا

  

کمپالا (نیوز ڈیسک) انسان کو قدرت نے احساسات سے نوازا ہے مگر جب یہ گمراہ ہوتا ہے تو بے حس ترین مخلوق کا روپ دھار لیتا ہے۔ یوگنڈا کے بدنام زمانہ مجرم جوزف کونی کا شمار بھی ایسے ہی درندوں میں ہوتا ہے جس نے اپنے ساتھی انسانوں کو ہی نوچ نوچ کر کھانا شروع کر دیا۔

بہن نے 17 سال قبل کیا وعدہ پورا کر دیا،بانجھ خاتون کو زندگی کی سب سے بڑی خوشی دے دی

یہ شخص یوگنڈا کے باغی گروپ لارڈز آرمی کا بانی اور سربراہ تھا اور اس ملک میں اپنے پراسرار مذہب کی حکومت قائم کرنا چاہتا تھا۔ اس نے ہزاروں کی تعداد میں بچوں اور خواتین کو اغواءکروایا اور انہیں ناقابل بیان جنسی اور جسمانی تشدد کا نشانہ بنایا۔ اس کے ظلم کا شکار ہونے والی ایک خاتون لاویل نے بتایا کہ جوزف اس کے علاقے کے لوگوں کو ڈرانا اور دھمکانا چاہتا تھا اور یہ پیغام دینے کیلئے اس نے 10 خواتین کو اغواءکر لیا جن میں لاویل بھی شامل تھی۔

اس نے خواتین کو برہنہ کر کے ایک قطار میں کھڑا کیا اور پھر اغواءکئے گئے دس لڑکوں کو حکم دیا کہ وہ تیز دھار خنجروں سے خواتین کے نازک اعضاءکاٹیں۔ اعضاءکاٹنے کے بعد خواتین کو مجبور کیا گیا کہ وہ انہیں کھائیں اور پھر ان مظلوم خواتین کو اپنے ساتھ ہونے والی ظلم کی کہانی سنانے کیلئے ان کے گھروں میں واپس بھیجا گیا۔ جوزف کے خوفناک جرائم کی وجہ سے انٹرنیشنل کرمنل کورٹ اسے بین الاقوامی جنگی مجرم قرار دے چکی ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -