ادویات خریداری کا سپیشل آڈٹ کرانیکا فیصلہ

ادویات خریداری کا سپیشل آڈٹ کرانیکا فیصلہ

  

 لاہور( جاوید اقبال) صوبائی دارالحکومت کے ٹیچنگ اور ڈسٹرکٹ ہسپتالوں میں ادویات کی لوکل پرچیز میں خریداری کا سپیشل آڈٹ کرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کے تحت سرکاری ہسپتالوں کی طرف سے ادویات سرجیکل اور ڈسپوزیبل کی یومیہ بنیادوں کی لوکل پرچیز میں خریداری کا آڈٹ کرایا جائے گا ۔آڈٹ ایل پی میں دیئے گئے ٹھیکہ جات اور اس میں ادویات کی خورد برد ،غیر معیاری ادویات خریدنے ،مریضوں کی بجائے ہسپتالوں کی انتظامیہ کی طرف سے من پسند افراد کے نام پر لاکھوں روپے کی ادویات جاری کرنے کی شکایات سامنے آنے پر کیا جا رہا ہے ۔ شکایات میں بتایا گیا ہے کہ لاہور کے سرکاری ہسپتالوں کی انتظامیہ نے ایل پی کے ٹھیکیداروں کی ملی بھگت سے ان سے بھاری کمیشن پر ایل پی کے ٹھیکے من پسند فرموں کو سستے داموں دیئے اور قوانین کو پس پشت ڈال کر سرکاری خزانے کو کروڑوں روپے کا ٹیکہ لگایا گیا ۔ایل پی میں یومیہ بنیادوں پر مہنگے داموں ادویات کی خریداری کی گئی اوور چارجنگ سے کروڑوں روپے ایل پی فراہم کرنے والی فرموں کو دیے گئے جن کا بڑا حصہ ہسپتالوں کی انتظامیہ نے بطور کمیشن حاصل کیا ایل پی میں سابق میڈیکل سپرنٹنڈنٹس کی طرف سے ایل پی کے بلوں کی ادائیگی روکی گئی تھی مگر ان کی جگہ بعض بڑے ہسپتالوں کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹس نے چارج سنبھالتے ہی ایسی فرموں سے مک مکا کر کے ادائیگی کرادی جس سے قومی خزانے کو کروڑوں روپے کا نقصان پہنچا ۔ذرائع نے بتایا ہے کہ یہ رپورٹس وزیر اعلیٰ پنجاب کو بعض خفیہ اداروں کی طرف سے پیش کی گئی جس پر انہوں نے محکمہ صحت کو ایل پی کے ٹھیکوں اور جاری کی گئی ادویات کا سپیشل آڈٹ کرانے کا حکم دے دیا ہے ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیر اعلیٰ کو بتایا گیا تھا کہ بعض بڑے ہسپتالوں کی انتظامیہ نے مخصوص افراد کے نام پر ایل پی میں آوٹ ڈور کی پرچیوں پر ایک ایک دن میں ایک ایک نام نہاد مریض کے نام پر لاکھوں کی ادویات جاری کرائیں مگر اودیات کی بجائے نقد وصولی کر لی گئی ۔اس حوالے سے مشیر صحٹ خواجہ اسلیمان رفیق کا کہنا ہے کہ ادویات کی خریداری کو شفاف بنایا گیا ہے جس نے گھپلے کیے اس کے خلاف کارروائی ضروری ہو گی ۔آڈٹ بھی ہو گا اور خفیہ مانیٹرنگ بھی ہو گی

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -