یرغمالی چھڑانے میں دلیری پر امریکی نیوی سیل کو تمغہ شجاعت

یرغمالی چھڑانے میں دلیری پر امریکی نیوی سیل کو تمغہ شجاعت

  

واشنگٹن (اے پی پی) امریکی صدر براک اوباما نے افغانستان میں طالبان باغیوں کے ہاتھوں یرغمال بنائے گئے ایک امریکی سویلین کو چھڑانے میں بہادری کی داستان رقم کرنے پر سینئر چیف اسپیشل وارفیر آپریٹر، بائرز کو ملک کا سب سے بڑا تمغہ شجاعت (ایوارڈ آف آنرز) عطا کیا۔امریکی فوجی تاریخ میں اب تک کل پانچ سیلز کو یہ تمغہ دیا گیا ہے۔ دسمبر 2012 میں کی گئی اِس فوجی کارروائی کا حوالہ دیتے ہوئے، وائٹ ہاوس نے سیل بائرز کے بہادری کے کارناموں اور بے غرض خدمات کی نشاندہی کی۔ پینٹاگان نے اِس جری کارنامے کا ذکر اِس طرح کیا کہ متعدد دشمنوں کا سامنا کرتے ہوئے، سیل نے شجاعت کا مظاہرہ کرتے ہوئے دو بدو مقابلہ کیا اور کامیاب رہا۔ امریکی ٹی وی سی این این کی رپورٹ کے مطابق، ایک دفاعی اہل کار سے موصول ہونے والی صیغہ راز میں نہ رہنے والی ایک رپورٹ کے مطابق، بائرز نے بہادری کی بہترین صلاحیت، غیر معمولی شجاعت اور اپنی جان پر کھیل کر وار کیا، اور اِس بات میں کوئی شک نہیں کہ وہ اِس تمغے کے حقدار ہیں۔ دلیپ جوزف، ایک امریکی معالج ہیں، جنھیں مشرقی افغانستان میں برغمال بنایا گیا تھا، جنھیں چھڑانے کی کارروائی کے دوران بحریہ کے اسپیشل وارفیر ڈولپمنٹ گروپ کے ایک اور رکن کی موت واقع ہوئی۔

مزید :

عالمی منظر -