6ماہ بعد بھی جوبلی ٹاؤن کے ملازمین کو تیار شدہ گھروں کا قبضہ نہ مل سکا

6ماہ بعد بھی جوبلی ٹاؤن کے ملازمین کو تیار شدہ گھروں کا قبضہ نہ مل سکا

  

لاہور (اپنے خبر نگار سے)6ماہ گزرنے کے بعد بھی جوبلی ٹاؤن ایل ڈی اے کے ملازمین کو تیار شدہ گھروں کا قبضہ نہ مل سکا ٹھیکیدار نے مکمل ادائیگی کے بغیر گھروں کا قبضہ دینے سے انکار کر دیا جس سے ملازمین میں بے چینی پائی جاتی ہے ملازمین نے ایل ڈی اے حکام سے ٹھیکیدار کو بل کی ادائیگی کرنے کی درخواست کی ہے تفصیلات کے مطابق لاہور ڈیویلپمنٹ اتھارٹی کی جوبلی ٹاؤن سکیم کے ایف بلاک میں بنائے گئے پانچ پانچ مرلہ کے گھروں کو بنے 6ماہ سے بھی زیادہ عرصہ بیت چکا ہے مگر ابھی تک ان کی ملازمین کو قبضہ نہ مل سکا ہے ذرائع کے مطابق 2013 میں شروع ہونے والے ایف بلاک جوبلی ٹاؤن سکیم میں پانچ پانچ مرلہ کے تیس گھر چھ ماہ سے تیار ہیں ملازمین قبضہ حاصل کرنے میں ابھی تک ناکام ہیں جس کی وجہ یہ بتائی جاتی ہے کہ جس ٹھیکیدار نے یہ گھر تعمیر کئے ہیں ابھی تک ایل ڈی اے نیاس کو بل کی ادائیگی نہیں کی ۔جب ایل ڈی اے حکام سے بات کی گئی تو اتھارٹی کے افسران کا کہنا تھا کہ بنائے گئے گھروں پر کوالٹی کے لحاظ سے اتھارٹی کو تحفظات ہیں اس لئے ٹھیکیدار کو بل نہیں دیا گیا ہے اس حوالے سے ٹھیکیدار سے بات چل رہی ہے بہت جلد فائنل ہو جائے گی

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -