ریلوے نے ڈرائی پورٹس پر ایک سال کے دوران 66کروڑ روپے کما لیے

ریلوے نے ڈرائی پورٹس پر ایک سال کے دوران 66کروڑ روپے کما لیے

  

لاہور(محمد نواز سنگرا)پاکستان ریلوے نے ڈرائی پورٹس پر ایک سال کے دوران 66کروڑ روپے کما لیے۔کراچی،لاہور،اسلام آباد،پشاور،کوئٹہ اور پریم نگر ڈرائی پورٹس پر امپورٹس کی مد میں ساڑھے 65کروڑ سے زائد جبکہ ایکسپورٹ میں50لاکھ سے زائد آمدنی موصول ہوئی ہے۔تفصیلات کے مطابق پاکستان ریلوے جہاں مال گاڑیوں سے بھاری منافع کما رہا ہے وہا ں ڈرائی پورٹس پر بھی بہتری لائی گئی ہے اور محکمے نے ایک سال کے دوران 66کروڑ روپے سے زیادہ کما لیے ہیں ۔سب سے زیادہ آمدنی کراچی ڈرائی پورٹ پر ہوئی جہاں امپورٹس 40کروڑ روپے اکٹھے کیے گئے 2لاکھ12ہزار 240ٹن مال پاکستان لایا گیا اور 7563کنٹینرز پورٹ پر لائے گئے جبکہ ایکسپورٹ کی مد میں 1979کنٹینر ز باہر بھجوائے گئے جن پر 16062ٹن مال بھجوایا گیا 11لاکھ سے زائد آمدنی ہوئی ہیں ۔دوسرے نمبر پر لاہورڈ رائی پورٹس ہے جہاں پر13کروڑ روپے آمدنی ہوئی ،ایک لاکھ 55ہزار ٹن مال 2527کنٹینروں پر پاکستان لایا گیا جبکہ 500کنٹینرز ملک سے باہر بھجوائے گئے 8580ٹن مال بھجوایا گیا اور 7لاکھ آمدنی ہوئی۔اسلام آباد ڈرائی پورٹ پر 2809کنٹینرز لائے گئے جن میں 62ہزار 570ٹن مال لایا گیا جہاں پر 4کروڑ روپے آمدنی ہوئی جبکہ ایکسپورٹ کی مد میں 4لاکھ روپے کمائے گئے 10کنٹینر ز پر 63ٹن سامان باہر بھجوایا گیا۔پشاور ڈرائی پورٹ پر 11066کنٹینرز آئے جن پرایک لاکھ42ہزار سے زائد ٹن سامان لایا گیا جہاں پر 8کروڑ روپے سے زائد آمدنی ہوئی،جبکہ ایکسپورٹ کی مد میں 42کنٹینر ز مال باہر بھجوایا گیا جہاں پر 3لاکھ سے زائد آمدنی ہوئی ہے۔کوئٹہ ٖڈرائی پورٹ سے سامان باہر نہ بھجوانے کی وجہ سے ایکسپورٹ صفر ہے جبکہ امپورٹ کی مد میں ایک کنٹینر باہر سے سامان کا لایا گیا جس پر 20256ٹن سامان لایا گیا اور تین کروڑ سے زائد آمدنی ہوئی ہے۔ذرائع نے بتایا ہے کہ پاکستان ریلوے کنٹینرز ٹریفک کی مزید بہتری کیلئے کام کر رہا ہے اور کمرشل اور آپریشن میں بہتری سے رواں سال گزشتہ سال کی نسبت زیادہ آمدنی کی توقع کر رہا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -