’’چراغ تلے اندھیرا‘‘ گورنرہاؤس سندھمین موجود اسکول کی بجلی بند

’’چراغ تلے اندھیرا‘‘ گورنرہاؤس سندھمین موجود اسکول کی بجلی بند

  

 کراچی (رپورٹ/راجہ عمران) گورنر ہاؤس سندھ میں چراغ تلے اندھیرے کی صورت حال سامنے آگئی ہے ۔ایک تقریب میں وزیراعظم کی موجودگی میں ’’نہ بس چل رہی ہے اور نہ بس چل رہا ہے ‘‘ کہ ریمارکس دینے والے ڈاکٹرعشرت العباد خان کے اپنے گورنر ہاؤس میں ٹھیک سے اسکول بھی نہیں چل پارہا ہے ۔گورنرہاؤس کے احاطے میں موجود گورنمنٹ گرلز سیکنڈی اسکول کی بجلی منقطع ہونے کے باعث طالبات کو گرمی کے موسم میں شدید مشکلات کا سامنا ہے ۔کے الیکٹرک نے عدم ادائیگی کے باعث اسکول کا کنکشن منقطع کردیا ہے ۔ذرائع کے مطابق گورنر ہاؤس سندھ کے احاطے میں موجود گرلز سیکنڈری اسکول پریذیڈنٹ ہاؤس میں 500سے زائد طالبات زیر تعلیم ہیں ۔گزشتہ ڈیڑھ سال سے عدم ادائیگی کے باعث کے الیکٹرک نے مذکورہ اسکول کی بجلی منقطع کردی تھی ۔ذرائع کے مطابق اسکول کی پرنسپل کی جانب سے متعدد باراعلیٰ حکام کو اس حوالے سے شکایات ارسال کی گئیں کہ بجلی نہ ہونے کے باعث طالبات کو شدید مشکلات کا سامنا ہے اس لیے مسئلے کو حل کرنے کے لیے فوری اقدامات کیے جائیں تاہم اعلیٰ حکام کے کانوں میں جوں تک نہیں رینگی ۔ذرائع کے مطابق ڈیڑھ سال کے بعد محکمہ تعلیم کے افسران کی آنکھیں کھلیں اوران کے اقدامات کے باعث عارضی طور پر اسکول کی بجلی بحال کردی گئی ۔لیکن افسوس ناک امر یہ ہے کہ دو ماہ بعد ہی کے الیکٹرک حکام نے اسکول کے بچوں کو ایک مرتبہ پھر بجلی سے محروم کردیا ہے ۔سردی کے موسم میں تو طالبات کسی نہ کسی طرح حصول علم کے لیے اس بندش کو برداشت کرتی رہیں لیکن موسم گرم ہونے کے ساتھ ہی طالبات کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔ذرائع کے مطابق حالیہ دنوں میں پڑنے والی شدید گرمی کے باعث متعدد طالبات کے دوران تعلیم بے ہوش ہونے کی اطلاعات بھی سامنے آئی ہیں ۔جبکہ متعدد طالبات نے ایسی صورت حال میں اسکول آنے سے ہی انکار کردیا ہے ۔گورنمنٹ گرلز سیکنڈری اسکول پریذیڈنٹ ہاؤس کی طالبات نے نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر روزنامہ پاکستان کو بتایا کہ یہ اسکول کا کافی پرانا مسئلہ ہے اور اس حوالے سے متعدد بار شکایات اعلیٰ حکام کوارسال کی گئی ہیں ۔چند ماہ قبل اسکول کی بجلی بحال بھی کردی گئی تھی لیکن عدم توجہ کے باعث ایک مرتبہ پھر گرمی کے موسم میں اساتذہ اور طالبات کو پھر اسی عذاب میں مبتلا کردیا گیا ہے ۔طالبات کا کہنا تھا کہ اس اسکول کامعیار تعلیم کسی پرائیویٹ اسکول سے کم نہیں ہے اور یہاں کی طالبات نے ہمیشہ اچھے نتائج حاصل کیے ہیں لیکن اس قسم کی صورت حال میں ان کو تعلیمی سفر جاری رکھنے میں شدید دشواری کا سامنا ہے ۔اسکول کی طالبات نے گورنر سندھ ،وزیراعلیٰ سندھ اور محکمہ تعلیم کے اعلیٰ حکام سے اپیل کی ہے کہ وہ فوری طور پر اس مسئلے کی طرف توجہ دیں اور اساتذہ اور طالبات کو اس ذہنی کوفت سے نکالیں ۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -