پنجاب اسمبلی سے تحفظ نسوال بل پاس کرانا غیر شرعی اور خلاف اسلام اقدام ہے ، سمیع الحق

پنجاب اسمبلی سے تحفظ نسوال بل پاس کرانا غیر شرعی اور خلاف اسلام اقدام ہے ، ...

  

 نظام پور(نمائندہ پاکستان )جمیعت علماء اسلام (س) کے سربراہ مولانا سمیع الحق نے کہا ہے کہ پنجاب اسمبلی میں تحفط نسواں کے نام پر بل پاس کرانا غیر شرعی اورسریعاً خلاف اسلام اقدام ہے نواز حکومت مغربی تہذیب کو اس عظیم اسلامی مملکت خداداد پاکستان میں پروان چڑھا کر پاکستان کا اسلامی تشخص مسخ کر رہی ہے اور ایسے غیر شرعی قوانین کا نفاظ کر کے ملک کو لبرل بنانے کے اعلان کو عملی شکل دے رہی ہے س بل سے ملک کی غیرت مند خواتین اور مردوں کو مادر پدر آزاد بنانے کا پروگرام شروع ہو چکا ہے مردوں کو اپنی بیٹیوں اور بیویوں سے کسی معاملے پر باز پرس سے روکنا عملاًطلاق کا دروازہ کھولنا ہے اس بل میں مردوں کو کڑا پہنانے کی بات گویا عورت سے چوڑیاں اُتا رکر مردوں کو پہنائی جا رہی ہے وہ اپنی رہا ئش گاہ پراخباری نمائندوں سے بات چیت کر رہے تھے انہوں نے کہا کہ اس بل کو پاس کرنے کا مقصد مغربی آقاؤں کو خوش کرنا ہے ایک طرف تبلیغ اسلام اور مدارس پر پابندی لگائی جارہی ہے تو دوسری طرف سرعام اسلامی قوانین سے بغاوت کی جارہی ہے شریف برادران قوم کو اصل ایجنڈا بتائیں کہ وہ کن کے اشاروں پر یہ سب کچھ کر رہے ہیں انہوں نے کہا کہ وقت کا تقاضا ہے کہ دینی اور محب وطن جماعتیں مشترکہ لائحہ عمل اختیار کرکے بھر پور مزاحمت کا اعلان کرے انہوں نے کہا کہ ملک میں عدل وانصاف اور میرٹ کا شفاف نظام رائج نہیں کیا جاتا،انصاف کے بغیر ایک فلاحی معاشرے کا قیام محض ایک خواب ہے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ تبدیلی کے نام پر بنی صوبائی حکومت بھی وعدوں کے مطابق شفافیت لانے میں ناکام رہی ہے چاہیے تو یہ تھا کہ عمران خان خیبر پختون خوا کو ملک بھر کے لیے رول ماڈل بنا لیتے تو عوام کا اعتماد ان پر مذید بڑھ جاتا۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -