مصطفی کمال کی پریس کانفرنس، نئی جماعت کا امکان کم، تیسرے آپشن کی طرف جاسکتے ہیں: سینئر صحافی مظہر عباس

مصطفی کمال کی پریس کانفرنس، نئی جماعت کا امکان کم، تیسرے آپشن کی طرف جاسکتے ...
مصطفی کمال کی پریس کانفرنس، نئی جماعت کا امکان کم، تیسرے آپشن کی طرف جاسکتے ہیں: سینئر صحافی مظہر عباس

  

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) سینئر صحافی و تجزیہ کار مظہر عباس نے کہا ہے کہ مصطفی کمال اور انیس قائم خانی ایم کیو ایم اورایم کیو ایم حقیقی کی بجائے تیسرے آپشن کی طرف جاسکتے ہیں۔

نجی ٹی وی جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے مظہر عباس کا کہنا تھا کہ مصطفیٰ کمال کی عوامی مقبولیت بہت زیادہ ہے جبکہ انیس قائم خانی کا تنظیمی تجربہ ایم کیو ایم کے کسی بھی رہنما سے زیادہ ہے اس لیے ان کی آج کی پریس کانفرنس انتہائی اہمیت کی حامل ہوگی۔ ایم کیو ایم میں پہلے بھی ایم کیو ایم حقیقی کا تجربہ کیا گیا جو کہ ناکام رہا ہے اس لیے مصطفی کمال نئی پارٹی کا اعلان نہیں کریں گے بلکہ ایم کیو ایم کے اندر ہی گروپ بننے کے قوی امکانات ہیں۔

آج کی پریس کانفرنس میں یہ بات بھی مد نظر رکھنی چاہیے کہ پچھلے ایک دو ہفتے میں گورنر سندھ بھی کافی متحرک نظر آئے ہیں اور انہوں نے کراچی کے ترقیاتی منصوبوں میں کافی دلچسپی دکھائی ہے اسی لیے ایم کیو ایم کے اندرونی حلقوں میں دونوں رہنماؤں کی واپسی میں ڈاکٹر عشرت العباد کا کردار بھی اہم سمجھا جارہا ہے۔

مظہر عباس کا کہنا تھا کہ اگر مصطفی کمال نے سیاسی جماعت بنائی تو ایم کیو ایم کاردعمل یہ ہوگا کہ یہ نئی جماعت سٹیبلشمنٹ کی ایم کیو ایم کے خلاف سازش ہے لیکن فی الحال کسی نئی سیاسی جماعت کے اعلان کا امکان کم ہے۔ دوسری طرف ایم کیو ایم رہنما انیس قائم خانی کی اس طرح واپسی کو ایم کیو ایم رہنماوں نے حیران کن قرار دیا انہیں توقع نہیں تھی کہ انیس قائم خانی اس طرح سے پریس کانفرنس کریں گے۔

مزید :

کراچی -