ایم کیوایم کا تاریک چہرہ بے نقاب کرتے ہوئے مصطفیٰ کمال جذباتی ہوکر رودیئے

ایم کیوایم کا تاریک چہرہ بے نقاب کرتے ہوئے مصطفیٰ کمال جذباتی ہوکر رودیئے
ایم کیوایم کا تاریک چہرہ بے نقاب کرتے ہوئے مصطفیٰ کمال جذباتی ہوکر رودیئے

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) کراچی کے سابق ناظم مصطفیٰ کمال  قتل کے الزامات کے تحت پکڑے گئے ایم کیوایم سے وابستہ  کارکنان کا ذکر  کرتے ہوئے روپڑے ۔ انیس قائم خانی کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مصطفیٰ کمال کاکہناتھاکہ الطاف صاحب مسلسل جھوٹ بولتے چلے آرہے ہیں،الطاف حسین کو سات ،آٹھ ہزار لاشیں چاہییں تاکہ ان پرسیاست کرسکیں،اچھے خاندانوں کے لوگ انٹرنیشنل دہشت گرد ہوگئے اوراس آدمی کی وجہ سے لوگ مہاجروں کو’’را‘‘کے ایجنٹ تصورکرتے ہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ کیا صولت مرزا کا شاہد حامد سے کوئی ذاتی جھگڑا تھا،صولت مرزا کو شاہد حامد کا قاتل کس نے بنایا؟ کیا وہ ماں کے پیٹ سے ہی قاتل باہر آیا، صولت مرزا جس پارٹی کے تھے انھیں وہ جماعت اون نہیں کرتی ۔اُن کاکہناتھاکہ ڈاکٹر عمران فاروق کو قتل کرنیوالے لوگوں کی مائیں اسی شہر، اسی ملک میں نہیں رہتیں ، کیا ان کی بہنوں کی شادیاں تیار نہیں تھی ،متحدہ نوجوانوں کو کلفٹن پر اسلحہ چلانے کی تربیت  کا مشورہ دیتی ہے ، آخر کیوں؟ اجمل پہاڑی کو کس نے دہشتگرد بنایا؟  یہ آدمی ہمیں کہاں لے آیا ؟ ماں کے پیٹ سے کوئی قاتل یا را کا ایجنٹ بن کرنہیں آیا، پارٹی نے بنا دیا اور اس کیساتھ ہی آبدیدہ ہوگئے ۔

مزید :

کراچی -