محکمہ تعلیم نے 13سکول دانش اتھارٹی سے واپس لے لئے

محکمہ تعلیم نے 13سکول دانش اتھارٹی سے واپس لے لئے

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)اساتذہ اور والدین کے شدید احتجاج پر محکمہ تعلیم نے لاہورکے 13سرکاری سکول دانش سکولزاتھارٹی سے واپس لے لئے۔اب ان کا انتظام محکمہ سکول ایجوکیشن کے ذمہ ہو گا ۔ محکمہ تعلیم نے سکولوں کی واپسی کا حتمی نوٹیفکیشن جاری کر دیا۔تفصیلات کے مطابق محکمہ تعلیم نے2016میں تجرباتی طور لاہور اور دیگر شہروں کے 26سرکاری سکولوں کو دانش سکول اتھارٹی کے حوالے کیا تھا جس کے بعد اساتذہ کی تنظیموں کے ساتھ ساتھ والدین کی ایک بڑی تعداد نے اس پر اپنے شدید تحفظات کا اظہار کیا تھا اور اس ضمن میں انہوں نے ہر فورم پر احتجاج بھی کیا تھا جس کومد نظر رکھتے ہوئے محکمہ تعلیم سکول ایجوکیشن نے سرکاری سکولوں کو مرحلہ وار دانش سکول اتھارٹی سے واپس لینے کا فیصلہ کیا۔اس حوالے سے محکمہ تعلیم نے یکم جنوری 2018کو ایک مراسلے کے ذریعے اس بات کا عندیہ دیا تھا کہ دانش سکول اتھارٹیز سے تمام 26سکولوں کو واپس لیا جائے گا ۔اس حوالے سے ان 26سکولوں میں سے لاہور کے 13سر کاری سکولوں کو دانش سکول اتھارٹی سے واپس لینے کا حتمی نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا ہے لاہور کے جن سرکاری سکولوں کو واپس لیا گیا ہے ان میں گورنمنٹ جونیئر اینڈ سنٹرل ماڈل سکول پتن روڈ لاہور،گورنمنٹ اسلامیہ ہائی سکول ملتان روڈ ،گورنمنٹ سنٹرل ماڈل سکول سمن آباد،گورنمنٹ ہائی سکول باغبانپورہ،گورنمنٹ ہائی سکول تاج پورہ سکیم ،گورنمنٹ گرلز ہائی سکول آر اے بازار،گورنمنٹ کمپری ہینسیو گرلز ہائی سکول وحدت روڈ،ہائی سکول ٹاؤن شپ ،گورنمنٹ ہائر سیکنڈری سکول چوہنگ،گورنمنٹ ہائی سکول کاہنہ نو،گورنمنٹ بوائز ہائر سیکنڈری سکول جلو موڑ، گورنمنٹ ہائی سکول شاہدرہ اور گورنمنٹ ہائی سکول سعید مٹھا شامل ہیں۔ جنرل سیکرٹری پنجاب ٹیچرز یونین رانا لیاقت نے لاہور کے 13سرکاری سکولوں کی دانش سکول اتھارٹی سے واپسی کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ دیر آید درست آید محکمہ تعلیم نے سکولوں کا دوبارہ انتظام سنبھال کر بہترین اقدام کیا ہے

سکول واپس

مزید : میٹروپولیٹن 1