آٹومیٹک اسلحہ لائسنسوں کی منسوخی کانوٹیفکیشن کالعدم

آٹومیٹک اسلحہ لائسنسوں کی منسوخی کانوٹیفکیشن کالعدم

لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے آٹومیٹک اسلحہ لائسنسوں کی منسوخی کے حوالے سے وفاقی وزارت داخلہ کی جانب سے جاری کردہ نوٹیفکیشن کالعدم قرار دے دیا ۔لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شاہد کریم نے کیس کی سماعت کی، درخواست گزار کے وکیل بیرسٹر علی ظفر نے موقف اختیار کیا کہ آئین کے تحت جان مال کا تحفظ حاصل ہے،ملک میں امن و امان کے مسائل کی بناء پر اپنے تحفظ کیلئے شہریوں نے آٹو میٹک اسلحہ کے لائسنس بنوا رکھے تھے۔انہوں نے بتایا کہ وفاقی وزارت داخلہ نے کسی قانونی جواز کے بغیر شہریوں کے خود کار اسلحہ کے لائسنس کسی قانونی جواز کے بغیر منسوخ کر دئیے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کے اس اقدام سے شہری شدید عدم تحفظ کا شکار ہو گئے ہیں جو کہ بنیادی حقوق کی سنگین خلاف ورزی ہے۔ اٹھارہویں ترمیم کے بعد یہ معاملہ صوبائی ہے جس میں وزارت داخلہ کا نوٹیفکیشن غیر قانونی ہے جس پر عدالت نے وفاقی وزارت داخلہ کی جانب سے جاری کردہ نوٹیفکیشن کالعدم قرار دے دیا۔

نوٹیفکیشن کالعدم

مزید : صفحہ اول