نیب ریفرنسز،نواز شریف کی واجد ضیاء سے ایک ہی باز بیان لینے کی درخواست مسترد،2گاہوں پر جرح مکمل

نیب ریفرنسز،نواز شریف کی واجد ضیاء سے ایک ہی باز بیان لینے کی درخواست ...

اسلام آباد (آئی این پی) احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم نواز شریف کی تینوں ریفرنسز پر واجد ضیاء سے ایک ساتھ جرح کرنے کی درخواست مسترد کر دی، واجد ضیاء لندن فلیٹ ریفرنس میں 8مارچ، العزیزیہ ریفرنس میں 7مارچ اور فلیگ شپ ریفرنس میں 5مارچ کو جرح کیلئے احتساب عدالت پیش ہوں گے۔ جمعہ کو نواز شریف کی تینوں ریفرنسز پر واجد ضیاء سے ایک ساتھ جرح کرنے کی درخواست احتساب عدالت نے مسترد کر دی، لندن فلیٹ ریفرنس میں جرح کیلئے واجد ضیاء 8مارچ کو طلب جبکہ العزیزیہ ریفرنس میں 7مارچ اور فلیگ شپ ریفرنس میں واجد ضیاء 5مارچ کو جرح کیلئے احتساب عدالت پیش ہوں گے۔

واجد ضیاء

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) آئی این پی ) احتساب عدالت میں سابق وزیراعظم نوازشریف، مریم نوازاورکیپٹن(ر)محمد صفدرکے خلاف نیب ریفرنسزکی سماعت کے دوران گواہان نے اپنے بیانات ریکارڈ کرادیئے ۔ جمعہ کو جوڈیشل کمپلیکس اسلام آباد میں احتساب عدالت کے جج محمد بشیرنے سابق وزیراعظم نوازشریف، ان کی صاحبزادی مریم نواز اورداماد کیپٹن(ر)محمد صفدرکے خلاف نیب ضمنی ریفرنسز کی سماعت کی ۔ سماعت کے دوران فلیگ شپ ریفرنس میں گواہ عبدالحنان اورالعزیزیہ ریفرنس میں گواہ سنیل اعجاز نے اپنے بیانات ریکارڈ کرادیئے جب کہ دونوں گواہان سے جرح بھی مکمل ہوگئی ہے۔دوران سماعت عبدالحنان نے عدالت کو بتایا کہ میں نے ہل میٹل سے آنے والی رقوم کی تفصیلات نیب کو فراہم کیں، اس سلسلے میں سسٹم جنریٹڈ دستاویزات بھی اس نے خود تیارکیں اورتمام دستاویزات نیب کے تفتیشی افسرکوفراہم کیں۔العزیزیہ ریفرنس میں گواہ سنیل اعجازنے اپنے بیان میں موقف اختیارکیا کہ میں شریف ایجوکیشن کمپلیکس ٹرسٹ برانچ لاہورمیں برانچ منیجر ہوں اور 23 جنوری 2018 کو تفتیشی افسر کے سامنے پیش ہوا۔ ہل میٹل سے اکا ؤ نٹ میں آنے والی رقوم کی دستاویزات سسٹم سے تصدیق کے بعد تفتیشی افسر کو فراہم کیں۔

مزید : رائے /کراچی صفحہ اول