باجوڑ ایجنسی محکمہ تعلیم کی کارکردگی غیر تسلی بخش

باجوڑ ایجنسی محکمہ تعلیم کی کارکردگی غیر تسلی بخش

باجوڑ ایجنسی ( نمائندہ پاکستان )باجوڑ ایجنسی محکمہ تعلیم کی کارکردگی غیر تسلی بخش ۔اساتذہ کی انکریمنٹس ،سروس بُک اور دیگر کاغذات مہینوں بھر لٹکتے رہتے ہیں ۔محکمہ ایجوکیشن کے حکام کی غفلت کیوجہ سے سال نو میں بچوں کو سکول میں داخلے کیلئے ایجنسی کے سطح پر کوئی خاطر خواہ اقدامات نہیں کئے گئے ۔ہزاروں بچوں کا مستقبل تاریک ہونے کا خدشہ ۔تفصیلات کے مطابق محکمہ تعلیم باجوڑ کی کارکردگی امسال 2017 کے مطابق انتہائی مایوس کُن رہی ایجنسی بھر میں شروع کی گئی مہم ( ہر بچہ سکول میں) بُری طرح ناکام ہوئی ایک طرف حکومت فاٹا سیکرٹریٹ کے ذریعے بچوں کو زیورتعلیم سے آراستہ کرانے کیلئے مختلف مہم شروع کرتے ہیں جس پر حکومت بھاری فنڈز خرچ کرتی ہیں لیکن ایجنسی بھر میں شروع کی گئی ہر مہم مکمل طور پر ناکام ہوئی جبکہ دوسری طرف محکمہ تعلیم کے غیر معیاری منیجمنٹ کیوجہ سے ذیادہ تر اساتذہ کے انکریمنٹس اور دیگر مسائل حل نہ ہونے کیوجہ سے محکمہ تعلیم کے گرد طواف کرنے لگے جبکہ ایک مخصوص طبقہ اپنے اثر رسوخ کیوجہ سے اساتذہ کے ٹرانسفرز اورپروموشن پر اثر اندا ہونے لگے جس سے ایجنسی ایجوکیشن آفس مچھلی بازار بن گیا ہے یاد رہے کہ فاٹا میں بدامنی کیوجہ سے سینکڑوں تعلیمی ادارے ملیامیٹ ہوچکے ہیں جبکہ غیر معیاری تعلیمی پالیسی کیوجہ سے بچے سکولوں سے باہر ہیں ایک اندازے کے مطابق ایجنسی بھر میں 60 ہزارا بچے اب بھی پرائمری تعلیم سے محروم ہیں عوامی حلقوں نے گورنر خیبر پختونخوا ،ایڈیشنل چیف سیکرٹری اور ڈائریکٹر ایجوکیشن فاٹا سے مطالبہ کیا کہ ایجنسی میں محکمہ تعلیم کی کارکردگی پر نظر ثانی کرکے بچوں کا مستقبل بچانے کیلئے اقدامات کریں ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر /رائے