اقلیتی رکن حلف ،سپیکر اور سیکرٹری اسمبلی سے جواب طلب

اقلیتی رکن حلف ،سپیکر اور سیکرٹری اسمبلی سے جواب طلب

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ نے عدالتی احکامات کے باوجود خیبرپختونخوااسمبلی کے اقلیتی رکن بلدیوکمار سے حلف نہ لینے پر سپیکراورسیکرٹری صوبائی اسمبلی کو توہین عدالت کانوٹس جاری کرکے جواب مانگ لیاہے عدالت عالیہ کے جسٹس ایوب خان اور جسٹس اکرام اللہ پرمشتمل دورکنی بنچ نے یہ احکامات گذشتہ روز اقلیتی رکن صوبائی اسمبلی بلدیوکمارکی جانب سے دائرتوہین عدالت کی درخواست پرجاری کئے اس موقع پران کے وکیل نے عدالت کو بتایاکہ درخواست گذاراقلیتی رکن صوبائی اسمبلی سورن سنگھ کے وفات پانے کے بعد رکن اسمبلی منتخب ہوئے ہیں اورسپیکرصوبائی اسمبلی درخواست گذار کے پروڈکشن آرڈرجاری نہیں کررہے تھے تاکہ ان سے حلف لیاجائے جس پرپشاورہائی کورٹ میں رٹ دائرکی گئی اورعدالت عالیہ کے دورکنی بنچ نے چند روز قبل رٹ پٹیشن منظورکرکے سپیکرصوبائی اسمبلی کو احکامات جاری کئے کہ وہ درخواست گذار کے صوبائی اسمبلی میں آنے کے لئے پروڈکشن آرڈر جاری کریں اوراسمبلی کااجلاس بلواکران سے حلف لیاجائے تاہم تین روز قبل انہیں اسمبلی تو طلب کیاگیاتاہم اسمبلی اجلاس کے دوران ان سے حلف نہیں لیاگیااوروہ اسی طرح لوٹ گئے اوریہ اقدام توہین عدالت کے زمرے میں آتاہے لہذاسپیکرصوبائی اسمبلی کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی عمل میں لائی جائے فاضل بنچ نے ابتدائی دلائل کے بعد خیبرپختونخوااسمبلی کے سپیکراورسیکرٹری کوتوہین عدالت کانوٹس جاری کرتے ہوئے ان سے6مارچ کو جواب مانگ لیاہے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر /رائے