فریال تالپور نے2012ء میں بھرتی ا ساتذہ کی تفصیلات طلب کر لیں

فریال تالپور نے2012ء میں بھرتی ا ساتذہ کی تفصیلات طلب کر لیں

کراچی (اسٹاف رپورٹر) پیپلز پارٹی کراچی کے رہنماؤں کی سفارش پر پیپلز پارٹی خواتین ونگ کی صدر فریال تالپور نے محکمہ اسکول ایجوکیشن میں سال2012ء میں بھرتی ہونیوالے دیگر کیڈر کے اساتذہ کی تفصیلات طلب کر لی ہے اور معاملے کو سینٹ الیکشن کے فوری بعد میرٹ پرجلد حل کرنے کی یقین دہانی بھی کرائی جبکہ پی پی کراچی کے سینئر نائب صدر راجہ عبدالرزق کاکہنا ہے کہ محکمہ تعلیم میں 6سال قبل کی گئی جعلی بھرتیوں کی حمایت کریں گے اور نہ ہی جائز بھرتیوں کی حمایت سے پیچھے ہٹیں گے ،کوشش کر رہے ہیں کہ حکومت کی مدت پوری ہونے سے قبل اساتذہ کے مسئلے کو حل کر کے انہیں تنخواہیں جاری کروادیں ۔تفصیلات کے مطابق محکمہ اسکول ایجوکیشن کراچی میں بھرتی ہونیوالے اساتذہ کوگذشتہ6سال سے تنخواہیں نہ ملنے کی سیکڑوں درخواستوں کا نوٹس لیتے ہوئے پیپلز پارٹی کراچی کے سینئر نائب صدر راجہ عبد الرزاق کی قیادت میں وفد نے پی پی خواتین ونگ کی صدر فریال تالپور سے ملاقات کی اس موقع پروزیر اعلی سندھ کے مشیر برائے کچی آبادی مرتضی بلوچ، ایم پی اے ساجدجوکھیو،چیئرمین ڈسٹرکٹ کونسل کراچی سلمان بلوچ اور دیگر رہنما بھی موجود تھے ۔وفد نے پیپلز پارٹی خواتین ونگ کی صدر فریال تالپور کو محکمہ تعلیم میں سال2012ء کے دوران سندھی لیگویج ٹیچرز ،ڈرائننگ ٹیچرز،اورینٹل ٹیچرز سمیت دیگر کیڈر کے اساتذہ اور نان ٹیچنگ اسٹاف کی بھرتیوں کی تفصیلات سے آگاہ کیا جس پر فریال تالپور نے معاملے پر مککمل تعاون کیساتھ وزیر اعلی سندھ سے بات چیت کرنے کی یقین دہانی بھی کرائی۔اس ضمن میں پی پی کراچی ڈویژن کے سینئر نائب صدر راجہ عبد الرزاق کا کہنا تھا کہ محکمہ اسکول ایجوکیشن میں پیپلز پارٹی کی اعلی قیادت کو سال2012ء میں کی گئی بھرتیوں کے اصل حقائق سے لاعلم رکھا گیا ،وفد نے ملاقات کے دوران اس بارے میں پیدا کی گئی شکوک و شبہات کو دور کر دیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ سال2012میں بھرتی اساتذہ کے معاملے کو ایگزیکٹو آڈر کے ذریعے حل کیا جا سکتا ہے اس مقصد کیلئے سندھ اسمبلی میں بل پیش کرنے کی ضرورت نہیں ہم صرف قواعد و ضوابط کے تحت کی جانیوالی بھرتیوں کی حمایت کر رہے ہیں جعلی بھرتیوں کی حمایت کسی صورت نہیں کر سکتے۔انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کراچی کے قائدین و رہنما حکومت کی مدت پوری ہونے سے قبل اساتذہ کے معاملے کو حل کرنے کے خواہشمند ہیں اور وہ آخری حد تک اساتذہ کیساتھ کھڑے رہیں گے۔

مزید : رائے /راولپنڈی صفحہ آخر