پاکستان سپر لیگ: مبینہ بنگالی سٹے باز سٹیڈیم میں گھس آیا، باہر نکال دیا گیا

پاکستان سپر لیگ: مبینہ بنگالی سٹے باز سٹیڈیم میں گھس آیا، باہر نکال دیا گیا
پاکستان سپر لیگ: مبینہ بنگالی سٹے باز سٹیڈیم میں گھس آیا، باہر نکال دیا گیا

  

لاہور (ویب ڈیسک) پاکستان کرکٹ بورڈ کے اینٹی کرپشن یونٹ نے متحدہ عرب امارات میں جاری پاکستان سپر لیگ کے دوران کارروائی کرتے ہوئے ایک مشکوک شخص کو سٹیڈیم سے باہر نکال دیا , میدان سے باہر نکالے جانے والے مشکوک شخص کا تعلق بنگلہ دیش سے بتایاگیا ہے۔

یہ واقعہ دبئی کرکٹ سٹیڈیم میں پیش آیا تھا۔ پاکستان کرکٹ بورڈ کے ذرائع نے اس مشکوک شخص کو گراﺅنڈ سے باہر کئے جانے کی و جہ یہ بتائی گئی ہے کہ وہ مبینہ طور پر موبائل فون پر میچ سے متعلق معلومات کسی کو فراہم کررہا تھا۔

پی سی بی نے ایک بکی کی تصویر بھی جاری کی ہے جس کا نام عمر ہے اور اس کا تعلق بنگلہ دیش سے ہے۔پی سی بی نے تمام کھلاڑیوں کو ہدایت کی ہے کہ عمر نامی بکیز سے رابطے سے گریز کریں اور جس کسی کو بھی پی ایس ایل میں یہ نظر آئے تو انتظامیہ سے فوری رابطٍہ کیا جائے۔

واضح رہے کہ موبائل فون کے ذریعے سٹیڈیم سے بکیز کو معلومات فراہم کرنے کو ’پچ سائیڈنگ‘ کہا جاتا ہے۔ پاکستان کرکٹ بورڈ نے اس بار میچ فکسنگ اور سپاٹ فکسنگ کی موثر روک تھام کے لئے انتہائی سخت اقدامات کئے ہیں, اس سلسلے میں گراﺅنڈ سے موبائل فون پر مشکوک رابطوں کو روکنے پر خاص نظر رکھی جارہی ہے جبکہ پاکستان کرکٹ بورڈ کے اینٹی کرپشن یونٹ نے ایک بین الاقوامی ویب سائٹ کی خدمات بھی حاصل کررکھی ہیں جس کا مقصد پاکستان سپر لیگ کے دوران شرطیں (بیٹنگ) لگانے کی کسی بھی قسم کی غیرمعمولی شرط لگتی ہے۔

یہ ویب سائٹ پاکستان کرکٹ بورڈ کے اینٹی کرپشن یونٹ کو فوری طور پر چوکنا کردے گی۔

مزید پڑھیں۔ ۔ ۔ نجم سیٹھی اور آئی سی سی حکام ایسے میں کیا کررہے ہیں؟ جاننے کیلئے یہاں کلک کریں۔

نجی نیوز چینل جیو نیوز کے مطابق دبئی میں پاکستان سپر لیگ کے تیسرے ایڈیشن کے دوران بھی سٹے بازوں نے سپاٹ فکسنگ کی ایک اور کوشش کی اور اس بار کھلاڑیوں سے رابطے کا ذریعہ سوشل میڈیا ویب سائٹس تھیں جسے پاکستان کرکٹ بورڈ کے اینٹی کرپشن یونٹ نے ناکام بنا دیا۔پاکستان کرکٹ بورڈ کے تفتیش کاروں نے انٹیلی جنس نیٹ ورک کے ذریعے جو شواہد حاصل کیے ہیں، اس کے مطابق ان سٹے بازوں کا تعلق بھارت اور بنگلہ دیش سے ہے، جنہوں نے پاکستان سپر لیگ کے دوران کم از کم تین ٹیموں کے کھلاڑیوں سے واٹس ایپ اور فیس ٹائم کے ذریعے رابطہ کیا تھا، لیکن تینوں کرکٹرز نے فوری طور پر اس واقعے کو رپورٹ کردیا ہے۔ دونوں سٹے باز دبئی میں دکھائی دیئے ہیں تاہم ابھی تک ٹیم ہوٹلوں سے دور ہیں۔

کھلاڑیوں نے اس واقعے کی رپورٹ اپنی ٹیموں اور پاکستان کرکٹ بورڈ کے کرنل اعظم کو دے دی، جس کے بعد انسداد کرپشن یونٹ فوری ایکشن میں آیا ہے۔انسداد کرپشن یونٹ نے تمام ٹیموں کے کھلاڑیوں کو نئی بریفنگ دی جس میں بتایا گیا کہ دونوں سٹے بازوں کی دبئی آمد کی اطلاع ہے۔ بریفنگ میں ایک سٹے باز کی تصویر بھی دکھائی گئی اور کھلاڑیوں کو ہدایت کی گئی ہے کہ ان میں سے کوئی بھی شخص ٹیم ہوٹل کے ارد گرد دکھائی دے تو اس کی فوری رپورٹ پاکستان کرکٹ بورڈ کو کردی جائے۔

مزید : کھیل /PSL /PSL News Update