گریڈ 19 کا عام افسر تو ایک لاکھ روپے تنخواہ لیتا ہے لیکن احد چیمہ کتنی تنخواہ لے رہے تھے؟ سپریم کورٹ میں ایسا انکشاف کہ آپ کے بھی ہوش اڑ جائیں گے

گریڈ 19 کا عام افسر تو ایک لاکھ روپے تنخواہ لیتا ہے لیکن احد چیمہ کتنی تنخواہ ...
گریڈ 19 کا عام افسر تو ایک لاکھ روپے تنخواہ لیتا ہے لیکن احد چیمہ کتنی تنخواہ لے رہے تھے؟ سپریم کورٹ میں ایسا انکشاف کہ آپ کے بھی ہوش اڑ جائیں گے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) سپریم کورٹ آف پاکستان میں ایل ڈی اے سٹی از خود نوٹس کیس کی سماعت کے دوران یہ انکشاف ہوا ہے کہ گریڈ 19 کا عام افسر تو ایک لاکھ روپے تنخواہ لیتا ہے لیکن احد چیمہ 14 لاکھ روپے تنخواہ لے رہے تھے۔

سپریم کورٹ رجسٹری لاہور میں ایل ڈی اے سٹی از خود نوٹس کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ احد خان چیمہ کون ہیں اس وقت کہاں ہیں اور کیا تنخواہ لے رہے ہیں؟۔

’’ اب اگر کسی افسر نے احتجاج کیا تو ۔۔۔ ‘‘چیف جسٹس نے احد چیمہ کے ساتھی بیوروکریٹس پر بجلیاں گرادیں

چیف جسٹس کو بتایا گیا کہ احد چیمہ گریڈ 19 کے افسر ہیں جو کہ سابق ڈی جی ایل ڈی اے اور قائد اعظم پاور پلانٹ کے موجودہ سی ای او ہیں اور اس وقت نیب کی حراست میں ہیں۔ عدالت کو یہ بھی بتایا گیا کہ گریڈ 19 کے افسر کی تنخواہ ایک لاکھ روپے تک ہوسکتی ہے لیکن احد چیمہ مختلف پراجیکٹس پر کام کر رہے ہیں اور سارے پراجیکٹس ملا کر 14 لاکھ روپے سے اوپر لے رہے تھے۔ چیف جسٹس نے چیف سیکرٹری پنجاب سے احد چیمہ کی سروس پروفائل، تنخواہوں اور مراعات کا ریکارڈ طلب کرلیا ۔

خیال رہے کہ احد چیمہ نیب کے ہاتھوں گرفتاری سے پہلے گریڈ 19 میں تھے تاہم گرفتاری کے اگلے ہی روز پنجاب حکومت نے انہیں 20 ویں گریڈ میں ترقی دے دی تھی۔

مزید : اہم خبریں /قومی /جرم و انصاف /علاقائی /پنجاب /لاہور