”لاہور قلندرز اور امپائرز کی یہ سنگین ترین غلطی شکست کی وجہ بنی کیونکہ جب فخر زمان ۔۔۔“ پی ایس ایل میچ میں بڑا ”بلنڈر“ ہو گیا، لاہور قلندرز اور امپائرز نے کیا غلطی کی؟ جان کر فواد رانا اور لاہوری مداح تو کیا ہر پاکستانی غصے سے آگ بگولہ ہو جائے گا

”لاہور قلندرز اور امپائرز کی یہ سنگین ترین غلطی شکست کی وجہ بنی کیونکہ جب ...
”لاہور قلندرز اور امپائرز کی یہ سنگین ترین غلطی شکست کی وجہ بنی کیونکہ جب فخر زمان ۔۔۔“ پی ایس ایل میچ میں بڑا ”بلنڈر“ ہو گیا، لاہور قلندرز اور امپائرز نے کیا غلطی کی؟ جان کر فواد رانا اور لاہوری مداح تو کیا ہر پاکستانی غصے سے آگ بگولہ ہو جائے گا

  

شارجہ (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) تمام تر رنگینیوں کیساتھ جاری ہے لیکن لاہور قلندرز کیلئے ہر رنگ پھیکا ہے اور مسلسل چوتھی شکست نے لاہوری مداحوں کو بھی شدید مایوس کیا ہے۔ گزشتہ شب اسلام آباد یونائیٹڈ کے ہاتھوں سنسنی خیز مقابلے کے بعد سپر اوور میں لاہور قلندرز کو شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ اس میچ میں بھی لاہور کی ٹیم کیساتھ وہ ہی کچھ ہوا جو پورے ٹورنامنٹ میں اس کے ساتھ ہوتا چلا آ رہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔”تمہیں پاکستانی ٹیم میں واپس بلا لیں گے اگر۔۔۔“ شاہد آفریدی نے شاندار کیچ پکڑا تو مکی آرتھر نے انہیں کیا کہا اور پھر شاہد آفریدی نے کیا جواب دیا؟ آفریدی کے مداحوں کی ’عید‘ ہو گئی، سوشل میڈیا پر ”بوم بوم“ ہو گئی 

اسلام آباد نے پہلے کھیلتے ہوئے مقررہ 20 اوورز میں 9 وکٹوں کے نقصان پر 121 رنز بنائے۔ اس اننگز کے نمایاں سکورر جے پی ڈومنی اور حسین طلعت تھے جنہوں نے بالترتیب 34 اور 33 رنز بنائے۔لاہور کی طرف سے سنیل نرائن نے شاندار سپن بولنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے چار اووروں میں صرف 10 رنز دئیے۔

اس کے جواب میں لاہور قلندرز نے ایک موقع پر دو وکٹوں کے نقصان پر 77 رنز بنا لئے تھے اور اسے 52 گیندوں پر صرف 45 رنز درکار تھے لیکن اس کی آخری 8 وکٹیں صرف 44 رنز پر گر گئیں۔لاہور کی طرف سے آغا سلمان نے 48 اور کپتان میکالم نے 34 رنز سکور کئے۔

اس میچ میں شکست کی وجہ جہاں کھلاڑیوں کی کارکردگی رہی وہیں امپائرز اور لاہور قلندرز کی ٹیم، مینجمنٹ اور کپتان کی ایک سنگین ترین غلطی بھی لاہور قلندرز کی کشتی کو لے ڈوبی۔ لاہور قلندرز کی جانب سے عمر اکمل اور برینڈن میکالم نے اوپننگ کی تو عمر اکمل آﺅٹ ہو گئے جس پر انہوں نے ڈی آر ایس ریویو لے لیا۔ بال ٹریکنگ میں سب کچھ ٹھیک ٹھاک نظر آنے پر ”امپائرز کال“ کا فیصلہ دیا گیا۔

اگلے بلے باز فخر زمان بھی ایل بی ڈبلیو آﺅٹ ہو گئے جس پر وہ کریز پر کچھ دیر کھڑے رہے اور ریویو لینا چاہا مگر امپائرز نے انہیں بتایا کہ ریویو ختم ہو چکا ہے حالانکہ ایسا نہیں تھا اور لاہور قلندرز کے پاس ریویو باقی تھا مگر امپائرز، لاہور قلندرز کی مینجمنٹ اور کپتان برینڈن میکالم کی کم علمی نے فخر زمان کو پویلین جانے پر مجبور کر دیا حالانکہ بال ٹریکنگ میں یہ نظر آ رہا تھا کہ وہ بال ’آن دی لائن‘ پچ نہیں ہوئی اور اگر وہ ریویو لے لیتے تو انہیں ناٹ آﺅٹ قرار دیدیا جاتا۔

فخر زمان کے ایل بی ڈبلیو کا بال ٹریکر (گیند لائن سے باہر گری)

آئی سی سی کے نئے قوانین کے مطابق ون ڈے انٹرنیشنل اور ٹی 20 میچ میں جب کوئی بلے باز ایل بی ڈبلیو آﺅٹ دئیے جانے پر ڈی آر ایس ریویو لیتا ہے تو فیصلہ تھرڈ امپائر کے پاس جاتا ہے۔ اس دوران نو بال اور ایج چیک کی جاتی ہے اور پھر بال ٹریکنگ سسٹم کے ذریعے یہ دیکھا جاتا ہے کہ کیا گیند آن دی لائن پچ ہونے کے بعد پیڈ سے ٹکرائی اور کیا گیند وکٹوں کو لگ رہی تھی؟

سب کچھ ٹھیک ٹھاک ہونے کے بعد اگر تھرڈ امپائر ”امپائرز کال“ کا فیصلہ دیدے تو فیلڈ امپائر کا فیصلہ برقرار رہتا ہی ہے لیکن بیٹنگ ٹیم کی جانب سے لیا گیا ریویو ضائع نہیں ہوتا مگر گزشتہ روز کے میچ میں جب عمر اکمل کے آﺅٹ ہونے اور ریویو لینے کے بعد فخر زمان بھی ایل بی ڈبلیو ہوئے اور ریویو لینا چاہا تو انہیں بتایا گیا کہ ریویو ضائع ہو چکا ہے۔

ڈیلی پاکستان کا یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

فخر زمان جب آﺅٹ ہوئے تو کمنٹیٹر نے بھی کہا کہ وہ ریویو لینا چاہ رہے ہیں اور ریویو لے بھی سکتے ہیں لیکن یہ دیکھ کر حیران رہ گئے کہ فخر زمان چاہنے کے باوجود بھی ریویو نہیں لے سکے۔ لاہور قلندرز کی انتہائی قیمتی وکٹ اس ڈرامائی انداز میں اسلام آباد یونائیٹڈ کو ملی اور پھر میچ میں جو کچھ ہوا، وہ پورے پاکستان نے دیکھ ہی لیا ہے۔

مزید : کھیل /PSL /PSL News Update