گاوں میں پھرتے کتے کے منہ میں انسانی پنڈلی، پولیس کو بلالیا گیا، یہ حصہ کس لڑکی کے جسم کا تھا ؟ حقیقت ایسی شرمناک ترین کہ جان کر ہر پاکستانی کانپ اُٹھے گا

گاوں میں پھرتے کتے کے منہ میں انسانی پنڈلی، پولیس کو بلالیا گیا، یہ حصہ کس ...
گاوں میں پھرتے کتے کے منہ میں انسانی پنڈلی، پولیس کو بلالیا گیا، یہ حصہ کس لڑکی کے جسم کا تھا ؟ حقیقت ایسی شرمناک ترین کہ جان کر ہر پاکستانی کانپ اُٹھے گا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

طرابلس (ویب ڈیسک)لیبیا میں وحشیانہ قتل کا ایک لرزہ خیز واقعہ سامنے آیا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ ایک شخص نے اپنی مطلقہ بیوی کو قتل کرنے کے بعد اس کی لاش کے ٹکڑے کیے اور اسے کتوں کے آگے ڈال دیا۔

نیوز ویب سائٹ العربیہ کے مطابق مقتولہ زینب علی انفیص کے قاتل کو ایک چھوٹی فوٹیج میں دیکھا گیا ہے جس میں وہ اپنے وحشیانہ جرم کا اعتراف کر رہا ہے۔ اس واقعے نے پورے ملک کے عوام کو ہلا کر رکھ دیا ہے۔مقامی ذرائع ابلاغ کے مطابق یہ واقعہ گذشتہ ہفتے طرابلس کے مغرب میں پیش آیا۔ اطلاعات کے مطابق ایک گھر کے قریب سے ایک کتے کو انسانی پنڈلی اٹھائے دیکھا گیا جس کے بعد اہل علاقہ حرکت میں آئے اور انہوں نے سیکیورٹی حکام کو اس بارے میں آگاہ کیا۔ پولیس نے ایک مشکوک مکان پرچھاپہ مار کرا بو بکرخلیفہ احمد نامی ایک شخص کو حراست میں لے لیا۔ اس کے گھر سے انسانی گوشت کے کچھ ٹکڑے ملے جو اس کی گرفتاری کا موجب بنے۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

مجرم نے پولیس کے سامنے اقرار جرم کیا اور کہا کہ اس نے خانگی جھگڑے پر پہلے بیوی طلاق دے تھی، بعد ازاں اسے قتل کرکے اس کے ٹکڑے ٹکڑے کردیے۔مجرم نے بتایا کہ اس نے بیوی کو غسل خانے میں بند کرکے ذبح کیا جس کے بعد اس کے ٹکڑے ٹکڑے کرکے لاش کتوں کےآگے ڈال دی۔ اس نے کہا کہ جب وہ میری بیوی تھی تو اس نے مجھ سے خیانت کا ارتکاب کیا تھا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی