’مجھے اپنے لئے دولہا کی تلاش ہے جو۔۔۔‘ نوجوان پاکستانی لڑکی نے اشتہار دے دیا، ایسی بات لکھ دی کہ پورے ملک میں دھوم مچ گئی، پڑھ کر آپ بھی اسے داد دیں گے

’مجھے اپنے لئے دولہا کی تلاش ہے جو۔۔۔‘ نوجوان پاکستانی لڑکی نے اشتہار دے ...
’مجھے اپنے لئے دولہا کی تلاش ہے جو۔۔۔‘ نوجوان پاکستانی لڑکی نے اشتہار دے دیا، ایسی بات لکھ دی کہ پورے ملک میں دھوم مچ گئی، پڑھ کر آپ بھی اسے داد دیں گے

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) آپ نے شادی کے اشتہارات تو بہت دیکھے ہوں گے لیکن اب ایک پاکستانی لڑکی نے فیس بک پر ایسا ’ضرورتِ رشتہ‘ کا اشتہار دے ڈالا ہے کہ پورے ملک میں اس کی دھوم مچ گئی۔ ڈیلی پاکستان گلوبل کی رپورٹ کے مطابق تانیہ رشید نامی اس لڑکی نے فیس بک پر دیئے گئے اشتہار میں لکھا ہے کہ ”دوستو! مجھے اپنے لیے ایک عدد دولہا چاہیے۔ میری شرائط بہت سادہ سی ہیں۔ برائے مہربانی اگر ایسا لڑکا کسی کی نظر میں ہو تو مجھے بتائے۔ شرائط یہ ہیں کہ لڑکا درازقد ہو، خوبصورت اور گورا ہو، جم میں خوب کسرت سے اس نے ’سکس پیک‘ بنا رکھے ہوں اور اگر اس کی آنکھیں نیلی ہوں تو اسے ترجیح دی جائے گی۔“

تانیہ رشید شرائط میں مزید لکھتی ہیں کہ ”لڑکا سگھڑ ہو، اسے گھریلو کام کاج کرنا آتا ہو۔ اسے قورمہ ، بریانی اور دیگر تمام دیسی کھانے بنانے آتے ہوں۔ بیوی کے والدین کے گھر رہائش پر رضامند ہو، بیوی اور اس کے والدین کی فرمانبرداری اور خدمت کرنے والا ہو(یہ اس کا فرض ہے اور جنت جانے کا ذریعہ بھی) اور ان سے دھیمے لہجے میں بات کرے۔ لڑکے کو فحش کپڑے، بنیان اور نیکر وغیرہ ، پہننے کی ہرگز اجازت نہ ہو گی کیونکہ ایسے کپڑے ساس اور سسر کو پسند نہیں۔ بیڈروم کے باہر مائع والی شلوار قمیص ہی پہننی ہو گی۔ شادی سے پہلے اس کا کوئی معاشقہ نہ رہا ہو، غیر لڑکیوں سے دوستی کرنے کا خواہش مند نہ ہو، نامحرم عورتوں/لڑکیوں سے پرہیز کرنے والا اور ضرورت پڑنے پر نظر جھکا کر بات کرنے والا ہو۔“

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

ویب سائٹ مینگوباز سے گفتگو کرتے ہوئے تانیہ رشید نے اپنے اس اشتہار کے متعلق بتایا کہ ”میں اپنی کچھ سہیلیوں کے ساتھ لڑکی کے رشتے کی عبارت پر بحث کر رہی تھیں۔ اس اشتہار میں یہ تمام شرائط درج تھیں۔ وہیں سے مجھے خیال آیا کہ اس اشتہار کو بالکل الٹ کر دینا چاہیے اور ’لڑکے کا رشتہ درکار ہے‘کے اشتہار میں یہ شرائط درج ہونی چاہئیں۔ جب کوئی لڑکی کا رشتہ تلاش کرنے نکلتا ہے تو اس کی خواہش ہوتی ہے کہ لڑکی کوئی روبوٹ ہو جو مالک کی خواہش کے عین مطابق چلے لیکن لڑکے کے متعلق ایسی کوئی شرط عائد نہیں کی جاتی۔ چنانچہ میں نے اس روایت کو توڑنے کے لیے یہ اشتہار فیس بک پر پوسٹ کیا۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس /علاقائی /اسلام آباد