’اس خاتون کا سال میں 2 دفعہ ٹیسٹ کروایا جائے کہ کہیں یہ حاملہ تو نہیں ہوگئی کیونکہ۔۔۔‘ کینیڈا کی عدالت نے خاتون کے حاملہ ہونے پر پابندی لگادی، تاریخ کا انوکھا ترین فیصلہ سنادیا

’اس خاتون کا سال میں 2 دفعہ ٹیسٹ کروایا جائے کہ کہیں یہ حاملہ تو نہیں ہوگئی ...

اوٹاوا(مانیٹرنگ ڈیسک) کینیڈا میں ایک عدالت نے ایک خاتون کے خلاف مقدمے کاتاریخ کا انوکھا ترین فیصلہ سناتے ہوئے حکم دیا ہے کہ سال میں اس کا دوبار ٹیسٹ کیا جائے کہ کہیں یہ حاملہ تو نہیں ہو گئی۔ خاتون کو یہ سزا ایک ایسے جرم میں دی گئی ہے کہ سن کر آپ دنگ رہ جائیں گے۔ دی گارڈین کی رپورٹ کے مطابق مونٹریال کی اس 43سالہ خاتون نے کچھ عرصہ قبل اپنے چوتھے بچے کو جنم دیا لیکن اس کی غفلت کی وجہ سے بچہ جاں بحق ہو گیا۔ ہوا یوں کہ اس خاتون کو علم ہی نہ ہو سکا کہ وہ حاملہ ہے۔ چنانچہ پیدائش کے وقت وہ باتھ ٹب میں تھیں اور وہیں بچے کی پیدائش ہو گئی۔ خاتون نے بچے کو ٹب سے نکالا، جو بے حس و حرکت تھا، اور اسے ایک پلاسٹک بیگ میں ڈال کر رکھ دیا۔ کچھ وقت بعد اس کا شوہر آیا اور اس نے بچے کو ہسپتال پہنچایا جہاں وہ تین دن تک بے ہوشی میں رہنے کے بعد جاں بحق ہو گیا۔

رپورٹ کے مطابق تفتیش کاروں کو جب خاتون نے بتایا کہ اسے آخری وقت تک اپنے حاملہ ہونے کا احساس ہی نہیں ہوا تو وہ اسے ہسپتال لے گئے جہاں اس کے ٹیسٹ کروائے گئے تو معلوم ہوا کہ وہ ”نان سائیکوٹک پریگنینسی ڈینائیل‘ (Non-psychotic pregnancy denial) نامی بیماری میں مبتلا ہے جس میں خواتین کو اپنے حمل کا احساس نہیں ہو پاتا۔ رپورٹ کے مطابق خاتون کی غفلت ثابت ہونے پر جج نے اسے 20ماہ گھر میں ہی قید کرنے کی سزا دی اور ساتھ ہی حکم دیا کہ سال میں دو بار اس کے حمل کا ٹیسٹ کیا جائے تاکہ آئندہ ایسا واقعہ رونما نہ ہو سکے۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی