ترقیاں سکیموں میں روڑے اٹکانے دانشمندی نہیں: ملک محمد خان آفریدی

ترقیاں سکیموں میں روڑے اٹکانے دانشمندی نہیں: ملک محمد خان آفریدی

  



کوھاٹ (بیورو رپورٹ) اقتدار میں خامیوں کا پتہ نہیں چلتا اپوزیشن میں رہ کر انسان کو اپنی خامیوں‘ کمزوریوں اور کامیابیوں کا علم ہوتا ہے کوئی مانے یا نہ مانے میں حلقہ 80 کا منتخب ایم پی اے ہوں سیاسی مخالفین کا مقابلہ دوگنا کام کر کے کیا جاتا ہے مگر ہمارے نادان مخالفین ترقیاتی کاموں میں رکاوٹیں ڈال کر اپنی توانائیاں ضائع کر رہے ہیں 2008 میں منتخب ہونے کے بعد سب سے زیادہ توجہ تعلیم کے شعبہ پر دی ان خیالات کا اظہار ممبر صوبائی اسمبلی ملک امجد خان آفریدی نے گورنمنٹ ہائیر سیکنڈری سکول میں سالانہ تقریب تقسیم انعامات میں بطور مہمان خصوصی کیا تقریب میں سکول پرنسپل‘ اساتذہ کرام‘ طلباء اور والدین کے علاوہ چیئرمین ڈیرہ اسماعیل خان تعلیمی بورڈ زاہد رشید نے خصوصی شرکت کی اپنے خطاب میں مہمان خصوصی نے کہا کہ میں نے تعلیمی ترقی کا سلسلہ گمبٹ گرلز ہائی سکول سے شروع کیا اور اپنے بارہ سالہ دور میں حلقے کے تمام علاقوں میں پرائمری‘ ہائی اور ہائیر سیکنڈری سکولز کا جال بچھایا جن میں تولنج‘ غورزئی‘ ناکبند‘ گل حسن بانڈہ‘ پرشئی‘ کنڈر‘ چورلکی‘ کوٹیری‘ زیارت شیخ اللہ داد‘ کیڑی شیخان‘ سپتہ سنڈہ‘ شادی خیل‘ کمال خیل میں گرلز ہائی سکول بنائے اس کے علاوہ بابری بناڈہ‘ گمبٹ اور دیگر کئی علاقوں میں ہائیر سیکنڈری سکول بنائے گمبٹ میں حلقے کا پہلا ڈگری کالج تعمیر کیا تاکہ ہمارے بچوں اور بچیوں کو گھروں کے نزدیک تعلیم کی سہولت میسر ہو سکے وزیراعظم سے وومن یونیورسٹی کے لیے 1 ارب روپے کی منظوری لی جس میں سے 25 کروڑ کی رقم آ چکی ہے انڈس ہائی وے پر 142 کنال زمین بھی منظور کروا لی ہے مگر ہمارے ارباب اختیار اس منصوبے کو ختم کرنے کی کوششوں میں مصروف ہیں گرلز ڈگری کالج بلی ٹنگ میں ابتدائی تین سالوں کے لیے کلاسز کے اجراء کے لیے ہماری کوششوں کے خلاف سازشیں کی جا رہی ہیں جس کی وجہ صرف امجد آفریدی کی ذات ہے انہوں نے کہا کہ مجھے نام اور کریڈٹ کی ضرورت نہیں مگر ارباب اقتدار مہربانی کر کے کوھاٹ کی بچیوں پر رحم کریں انہوں نے کہا کہ اس وقت وفاق اور صوبے میں تحریک انصاف کی حکومت ہے ہمارے وزراء نئی سکیمیں لے کر آئیں تاکہ عوام کی محرومیوں کا خاتمہ ہو سکے ہم تین بار ملک کے وزیراعظم کو کوھاٹ لے کر آئے تاکہ کوھاٹ ترقی کر سکے ہم نے 8 یونین کونسلوں میں گیس کی منظوری لی مگر اس میں بھی ہمارے نادان دوست رکاوٹیں دال رہے ہیں یہ لوگ نہیں چاہتے کہ ناکبند‘ شادی پور‘ گل حسن بانڈہ‘ چورلکی‘ کنڈر‘ جبڑ کی عوام کو گیس کی سہولت حاصل ہو ان منصوبوں پر انہوں نے حکم امتناعی لے رلکھا ہے جس کی جنگ میں ہائی کورٹ میں لڑ رہا ہوں 1ارب فنڈز منظور ہو چکے ہیں 50 کروڑ SNGPL کو مل چکے ہیں مگر گیس فراہم نہیں کی جا رہی انہوں نے ایم این اے کوھاٹ سے اپیل کی کہ خدارا حلقہ 80 کی عوام پر ظلم بند کریں مجھے منتخب کرنے کی سزا ان لوگوں کو نہ دیں ملک امجد آفریدی نے کہا کہ ایم این اے کھلم کھلا ہمارے منصوبوں میں روڑے اٹکا کر عوام کو تکلیف دے رہا ہے ہمیں بجلی کے کھمبے اور ٹرانسفارمر لگانے نہیں دیا جا رہا تمام سامان سٹور میں پڑا ہے مگر عوام کو اس سے کوئی سہولت نہیں عوام خود ان سے پوچھیں کہ ہماری سہولتوں کے کیوں یہ دشمن بنے ہوئے ہیں یہ لوگ نہ خود کام کرتے ہیں نہ ہمیں کام کرنے دیتے ہیں انہوں نے سکول پرنسپل کے مطالبے پر سکول کے باہر 50 کے وی ٹرانسفارمر کی فراہمی‘ 12 الیکٹرک کولرز لگانے‘ تین ایڈیشنل کلاس رومز کی منظوری سست سکول میں آئی ٹی لیبارٹری قائم کرنے اور سولر سسٹم دینے کا بھی اعلان کیا تقریب کے اختتام پر مہمان خصوصی نے نمایاں کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے طلباء میں انعامات تقسیم کیے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر