اپوزیشن اسمبلی میں شور شرابا کر کے کٹمنٹ سے بھاگ گئی: شوکت یوسفزئی

اپوزیشن اسمبلی میں شور شرابا کر کے کٹمنٹ سے بھاگ گئی: شوکت یوسفزئی

  



پشاور(سٹاف رپورٹر)خیبرپختونخوا کے وزیر اطلاعات شوکت یوسفزئی نے کہا ہے کہ اپوزیشن کے ساتھ ہونے والی اجلاس میں اپوزیشن نے اسمبلی اجلاس میں احتجاج نا کرنے کی یقین دہانی کرائی تھی اور سپیکر اسمبلی سے اپنے رویے پر معذرت کرنے کی کمٹمنٹ کی تھی لیکن آج پھر اسمبلی اجلاس میں شورشرابا کر کے اپوزیشن اپنی کمٹمنٹ سے بھاگ گئی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اپوزیشن کے ساتھ تمام مسائل پر بات کرنے کے لیے پہلے سے ہی راضی ہے کیونکہ بڑے بڑے مسائل بات چیت سے ہی حل ہوتے ہیں لیکن اپوزیشن کے پاس بات کرنے کے لیے کچھ ہے ہی نہیں اورنہ ہی وہ عوامی مسائل بڑے فورم اور اسمبلی میں ڈسکس کرنے میں سنجیدہ ہے۔ اپوزیشن کو احتجاج کرنے کا پورا پورا حق ہے لیکن اسمبلی پر عوام کا پیسہ خرچ ہوتا ہے اسلئے وہ عوام کے پیسوں پر اسمبلی میں احتجاج نہ کرے۔ افسوس ہے کہ اپوزیشن اپنی کمٹمنٹ سے بھاگ گئی ہے۔ وہ خیبرپختونخوا اسمبلی میں اپوزیشن کے احتجاج کے بعد میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ اسمبلی میں عوام کے مسائل پر بات ہوتی ہیں۔ اپوزیشن کو بھی عوامی مسائل سامنے لانے چاہیے۔ اپوزیشن کو آج امریکہ اور طالبان کے درمیان ہونے والے امن معاہدے پر بات کرنی چاہیے تھی کیونکہ اس کا سب سے زیادہ فائدہ ہمارے صوبے کو ہو گا۔ ہمارا خطہ دہشت گردی کی وجہ سے بہت متاثر ہؤا۔ افغانستان میں امن یا بدامنی کا براہِ راست اثر ہمارے ملک اور خاص طور پر خیبرپختونخوا پر پڑتا ہے۔ اپوزیشن ان مسائل پر بات نہ کر کے اسمبلی کا قیمتی وقت ضائع کرتی ہے۔ شوکت یوسفزئی نے کہا کہ اپوزیشن اپنی دور حکومت میں گیلپ سروے کا بہت ذکر اور حوالہ دیا کرتی تھی آج اسی گیلپ سروے کے مطابق وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان سب سے زیادہ کام کرنے والا وزیر اعلیٰ ہے باوجود اس کے کہ ہمارا ایک سال قبائلی اضلاع کے انضمام میں لگا۔ اپوزیشن اب جرات کا مظاہرہ کر کے یہ بات اور گیلپ سروے بھی مان لے کہ خیبرپختونخوا میں سب سے زیادہ ترقیاتی کام ہو رہے ہیں اور وزیر اعلیٰ محمود خان کی کارکردگی بہترین ہے۔

پشاور(سٹاف رپورٹر)خیبرپختونخوا کے وزیر اطلاعات شوکت یوسفزئی نے کہا ہے کہ پاکستان میڈیکل ٹورزم کے لیے موزوں ملک ہے کیونکہ یہاں بین الاقوامی شہرت یافتہ اور قابل ترین ڈاکٹرز موجود ہیں۔ ماضی میں بطور ہیلتھ منسٹر پوری کوشش کی کہ ہسپتالوں میں انٹرنیشنل لاونج بناوں ئ جہاں پر مریضوں کو ڈاکٹرز اور مکمل سہولیات موجود ہوں۔ امریکہ اور طالبان کے مابین امن معاہدے سے پاکستان میں میڈیکل ٹورزم میں بہت اضافہ ہو گا۔ اس قسم کے انٹرنیشنل کانفرنسوں کے انعقاد سے ینگ ڈاکٹرز کو سیکھنے کا موقع ملتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے تین روزہ 36 ویں انٹرنیشنل گیسٹرونیٹرولوجی کانفرنس کی اختتامی تقریب میں بطور مہمان خصوصی شرکت کرتے ہوئے کیا۔ پروفیسر ڈاکٹر عامر غفور، ڈاکٹر بخت بلند خان، پی ایس جی خیبرپختونخوا چیپٹر نے کانفرنس کی میزبانی کی۔ روئل کالج آف فزیشنز ایڈنبرا کوہوسٹ تھے جبکہ کالج کے صدر Prof Derek Bell OBE اور اس کی ٹیم نے کانفرنس میں شرکت کی۔ کانفرنس کے انعقاد کی میزبانی 15 سال بعد خیبرپختونخوا چیپٹر کے حصے میں آئی جس میں دنیا بھر سے 40 سے زیادہ فیکلٹی ممبران نے حصہ لیا۔ کانفرنس میں ڈاکٹروں کو تربیت دینے کے لیے 6 پری کانفرنسز کا انعقاد کیا گیا۔ انٹرنیشنل کانفرنس کی افتتاحی تقریب میں صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نے بطور مہمان خصوصی شرکت کی تھی۔ کانفرنس میں سینیٹر ڈاکٹر مہر تاج روغانی کو لائف ٹائم اچیومنٹ ایوارڈ سے نوازا گیا۔ شوکت یوسفزئی نے اپنے خطاب میں کہا کہ طالبان اور امریکا کے مابین امن معاہدے سے پاکستان کو بہت فائدہ ہو گا۔ یہاں پر میڈیکل ٹورزم کے ساتھ ساتھ تجارت میں اضافہ ہو گا۔ یہ امن معاہدہ پاکستان کی خارجہ پالیسی کی کامیابی ہے کیونکہ وزیراعظم عمران خان نے شروع دن سے کہا تھا کہ افغان مسئلے کے لئے امریکہ اور طالبان کے درمیان ڈائیلاگ ہونے چاہیے۔ یہ وزیراعظم عمران خان کے ویڑن کی جیت ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس خطے نے دہشت گردی کی وجہ سے کافی مشکلات دیکھی ہیں۔ اس امن معاہدے سے افغانستان کے راستے پاکستان کے لیے پورا سنٹرل ایشیا تجارت کے لئے کھل جائے گا جس سے پاکستان کی معیشت مضبوط اور ترقی کرے گی اور لوگوں کو روزگار کے مواقع فراہم ہو جائیں گے۔ صوبائی وزیر نے کامیاب کانفرنس کے انعقاد اور فارن فیکلٹی کی شرکت پر کانفرنس کی انتظامیہ اور مہمانوں کا شکریہ ادا کیا۔

مزید : صفحہ اول