بزرگان دین کی تعلیمات سے رہنمائی وقت کا تقاضہ ہے،سعید الحسن

  بزرگان دین کی تعلیمات سے رہنمائی وقت کا تقاضہ ہے،سعید الحسن

  



لاہور (فلم رپورٹر)صوبائی وزیر اوقاف سید سعید الحسن شاہ نے داتا دربار میں برصغیر پاک وہند کے معروف صوفی بزرگ خواجہ خواجگان حضرت خواجہ معین الدین چشتی اجمیریؒ کے 808ویں غسل مبارک کی تقریب میں شرکت کی۔انہوں نے چلہ گاہ کو عرق گلاب سے غسل دیا۔ اس موقع پر سیکر ٹری اوقاف چوہدری ارشاد،ڈائریکٹر جنرل طاہر رضا بخاری، چیئرمین مذہبی کمیٹی نذیر چوہان اور زائرین کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ اس موقع پرصوبائی وزیر اوقاف نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وقت کا تقاضاہے کہ ہم فلاحی معاشرے کی تشکیل کے لئے بزرگان اسلام کی تعلیمات سے رہنمائی حاصل کر یں۔

ان کے افکار اسلامی علوم و معارف کا خزانہ اوران کے آستانے روحانی فیوض کے مراکز ہیں۔ایک ہزار سال قبل ہند کی سرزمین میں ان بزرگان نے حرفِ حق کے ذریعے اللہ تعالیٰ کی وحدانیت، نبی ؐکی رسالت اور اسلام کی حقانیت کا جو بیج بویاوہ اللہ تعالیٰ کی تائیدونصرت سے ایک ایسا تناور درخت بن گیا جس کی جڑیں اس سرزمین میں نہایت مضبوط ہوگئیں اور شاخیں وسیع فضاؤں میں پھیل گئیں۔ انتہا پسندی کے خاتمے کے لیے صوفیا کے درسِ محبت کو عام کرنے کی ضرورت ہے۔ خواجہ معین الدین چشتی ?نے شرفِ انسانیت اور تکریم آدمیت کا درس دیا او ربرصغیر میں عظیم ترسماجی انقلاب کی بنیاد رکھی۔ آپ اخوت، مساوات،بھائی چارے اور انسان دوستی کے امین ہیں برصغیر کے صوفیا کی خانقاہیں بہبودِ انسانی کے مراکزہیں۔ صوفیا نے اسلام کی تبلیغ اپنے اخلاق کے ذریعہ کی۔ تمام بزرگان کی کتب شریعت و طریقت کے مضامین سے آراستہ ہیں۔انہوں نے صوفیانہ افکار و تعلیمات کو مکمل طورپر احکامِ شریعت کے نہ صرف تابع قراردیا بلکہ تصوف کو شریعت کا امین و نگہبان بنا کر پیش کیا اور یوں برصغیر میں ایک ایسے اسلامی مکتبِ تصوف کی بنیاد رکھی جِس کی بلندیوں پر ہمیشہ شریعت و طریقت کا پرچم لہراتا رہے گا

مزید : میٹروپولیٹن 1