بھارتی سپریم کورٹ لارجربینچ بنانے کیلئے دائر درخواستیں مسترد کردیں

  بھارتی سپریم کورٹ لارجربینچ بنانے کیلئے دائر درخواستیں مسترد کردیں

  



نئی دہلی(آئی این پی) بھارتی سپریم کورٹ نے آرٹیکل 370کیخلاف دائر تمام آئینی درخواستوں کو سات رکنی لارجر بینچ کو بھیجنے سے انکار کرتے ہوئے تمام درخواستوں کو مسترد کر دیا ہے۔ بھارتی میڈیا کے مطابق سپریم کورٹ میں گزشتہ برس 5 اگست کو آرٹیکل 370کو منسوخ کر تے ہوئے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کرنے کے اقدام کیخلاف مسلم رہنماؤں، سماجی کارکنان، نامور وکلا اور شہریوں کی جانب(بقیہ نمبر14صفحہ12پر)

سے درخواستیں دائر کی گئی تھیں۔درخواست گزاروں نے آرٹیکل 370کی منسوخی کیخلاف دائر پٹیشن کوسپریم کورٹ کے لارجر بینچ کو بھیجنے کی استدعا کی تھی۔ جسٹس این وی رامانہ کی سربراہی میں 5رکنی بینچ نے مسلسل 5ماہ تک درخواستوں کی سماعت کے بعد 23جنوری کو فیصلہ محفوظ کرلیا تھا۔سپریم کورٹ میں جسٹس این وی رامانہ نے گزشتہ روز فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ یہ معاملہ حل ہوچکا ہے اور سپریم کورٹ اس پر فیصلہ دے چکی ہے۔ اس لیے اب دائر درخواستوں کو لارجر بینچ بھیجنے کا کوئی جواز نہیں بنتا، عدالت تمام درخواستوں کو مسترد کرتی ہے تاہم ان درخواستوں کی اب موجودہ پانچ رکنی بینچ ہی سماعت کرے گی۔واضح رہے کہ درخواست گزاروں نے پانچ رکنی بینچ پر وفاق کا حامی ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے بینچ ارکان پر عدم اعتماد کا اظہار کیا تھا اور درخواستوں کو سات یا اس سے بھی بڑے بینچ کو ریفر کرنے کی استدعا کی تھی۔ درخواست گزار کے وکلا تھوڑی دیر میں پریس کانفرنس بھی کریں گے۔

بھارتی سپریم کورٹ

مزید : ملتان صفحہ آخر