سندھ روشن پروگرام میں مبینہ کرپشن،شرجیل میمن کی ضمانت میں ایک ہفتے کی توسیع

سندھ روشن پروگرام میں مبینہ کرپشن،شرجیل میمن کی ضمانت میں ایک ہفتے کی توسیع
سندھ روشن پروگرام میں مبینہ کرپشن،شرجیل میمن کی ضمانت میں ایک ہفتے کی توسیع

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آبادہائیکورٹ نے سندھ روشن پروگرام میں مبینہ کرپشن کیس میں شرجیل میمن کی درخواست ضمانت قبل از گرفتاری میں ایک ہفتے کی توسیع کرتے ہوئے سماعت11 مارچ تک ملتوی کردی۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آبادہائیکورٹ میں سندھ روشن پروگرم میں مبینہ کرپشن کیس میں شرجیل میمن کی درخواست ضمانت قبل ازگرفتاری پر سماعت ہوئی ،چیف جسٹس اطہر من اللہ کی سربراہی میں بنچ نے سماعت کی،چیف جسٹس نے پراسیکیوٹر نیب سے استفسارکیاکہ اسفندیارولی کیس میں سپریم کورٹ کی آبزرویشن پڑھی؟،سپریم کورٹ کی اس ججمنٹ میں گرفتاری کے اختیارات کے حوالے سے کہا گیا ہے،اس میں واضح لکھا ہے آپ صرف تفتیش کرسکتے ہیں کسی کو جج نہیں کر سکتے ،آپ ججمنٹ کو پڑھ کر آجائیں سماعت اگلے ہفتے دوبارہ رکھ لیتے ہیں ۔

پراسیکیوٹر نیب نے استدعاکی کہ سماعت اگلے ہفتے کے بجائے کل کیلئے رکھ لیں،چیف جسٹس نے استفسارکیا کہ آپ کو جلدی کسی چیز کی ہے ؟،پراسیکیوٹر نیب نے کہا کہ چیف جسٹس اس میں کچھ ریکارڈ مسنگ ہے،چیف جسٹس ہائیکورٹ نے کہا کہ اس کا مطلب ہے نیب کوصرف لوگوں کو گرفتار کرنے میں دلچسپی ہے ۔

چیف جسٹس نے تفتیشی سے استفسارکیا کہ کیاریفرنس فائل ہوا ہے؟،تفتیشی فسر نے کہا کہ اس کیس میں ابھی ریفرنس دائر نہیں ہوا،نیب پراسکیوٹر نے کہاکہ اس کیس میں 9 کروڑ روپے کی کرپشن ہوئی ،کیس کے سارے پیسے جعلی بینک اکاﺅنٹس کے ذریعے منتقل کردیئے گئے ،متعلقہ ڈیپارٹمنٹ کے سیکرٹری نے کہا 7 کروڑ کا طیک شرجیل میمن کے اکاﺅنٹ میں جمع ہوا ۔عدالت نے شرجیل میمن کی درخواست ضمانت قبل ازگرفتاری میں ایک ہفتے کی توسیع کرتے ہوئے سماعت11 مارچ تک ملتوی کردی۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد