شاہد خاقان عباسی نے اسحاق ڈار کو پاکستان واپس نہ آنے کا مشورہ دے دیا ،ساتھ بڑی وجہ بھی بتا دی

شاہد خاقان عباسی نے اسحاق ڈار کو پاکستان واپس نہ آنے کا مشورہ دے دیا ،ساتھ ...
شاہد خاقان عباسی نے اسحاق ڈار کو پاکستان واپس نہ آنے کا مشورہ دے دیا ،ساتھ بڑی وجہ بھی بتا دی

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان  آن لائن)پاکستان مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما اور سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ مریم نواز کے بغیر سرجری نہ کرانےکا بیان نامناسب ہے،نواز شریف کی لندن  سے رپورٹس بھیجنی چاہئیں تھیں،اسحاق ڈرا کو 100 بار مشورہ دوں  گا پاکستان واپس نہ آئیں،مریم نواز آج ایک حقیقت ہیں، پارٹی ورکر اور ووٹر  مریم نواز کو لیڈر مانتا ہے۔

نجی ٹی وی اے  آر وائے نیوزکے پروگرام ’’آف دی ریکارڈٖ‘‘ میں گفتگو کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ اسحاق ڈار کی جگہ میں ہوں تو کبھی پاکستان واپس نہ آتا ،اگر وہ مجھ سے مشورہ لیں تو اُنہیں کہوں کہ کبھی واپس نہ آئیں ،اسحاق ڈار نے ملک کے لئے کام کیا ،اسحاق ڈار کو مشورہ دوں گا کہ اس نیب کے  سامنے کبھی پیش نہ ہوں ،اسحاق ڈار  کو100بارمشورہ دوں گا  کہ وہ پاکستان واپس نہ آئیں ۔انہوں نے کہا کہ لندن  سے نواز شریف کی رپورٹس آ جائیں گی  ،کیا یہ ملک کا سب سے بڑا مسئلہ ہے؟ایک شخص کی میڈیکل رپورٹس پر پبلک میں بحث کی جا رہی ہے،حکومت کو کسی بیمار کی رپورٹس پبلک نہیں کرنی  چاہئےتھی،شوکت خانم ہسپتال کے ڈاکٹرز نے بھی کہا کہ نواز شریف بیمار ہیں ،نواز شریف کی بیماری پر حکومت سیاست کر رہی ہے،نواز شریف کی جو رپورٹس حکومت مانگ  رہی ہے،وہ مل جائیں گی،حکومت کاحق ہے کہ وہ نوازشریف کو مفرور قرار دے،

انہوں نےکہاکہ مریم نواز آج ایک حقیقت ہیں،مسلم لیگ ن میں اُنکابہت بڑا رول ہے،پارٹی  ورکراورووٹرزاُنہیں لیڈر مانتاہے،مریم نوازلندن چلی جائیں تو شہباز شریف بھی وطن واپس آجائیں گے, مریم نوازعوامی عہدہ نہیں رکھتی تھیں اِنہیں کیوں سزادی گئی؟ مریم نواز اس لئے خاموش ہیں کیونکہ وہ سزایافتہ ہیں، مریم نواز کب بولیں گی ؟یہ جماعت فیصلہ کریگی،مریم نواز کی جماعت پارلیمنٹ میں موجود ہے،آپ دیکھ لیں گے مریم نواز باہر نکلیں گی۔انہوں نے کہا کہ میں کسی ڈیل پر یقین نہیں کرتا، مشرف دور میں میرا نام سات سال تک ای سی ایل میں رہا،پرفارم اپوزیشن نہیں حکومت کرتی ہے،حکومت فیل ہوچکی ہے۔اُنہوں نےکہا کہ بلاول صاحب  نئے نئے آئے ہیں،اُنہیں اس طرح کی باتیں نہیں کرنی چاہئے،آپ ٹروتھ کمیشن بنا دیں اورقرآن پرلوگوں سےحلف لیں  سب سچ بولیں گے ، پاکستان میں کوئی الیکشن آ ج تک  فری اینڈ فئیر نہیں ہوا،2013 کے الیکشن میں بھی خرابیاں تھیں ۔شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ خواجہ آصف کیساتھ میراکوئی جھگڑا نہیں ہے، خواجہ آصف اور میرا معاملہ ہے وہ میں حل کر لوں گا، ہم اپنے اندرونی معاملات کو خود حل کرلیں گے،پارٹی کافیصلہ میرافیصلہ ہے،پارٹی کاغلط فیصلہ ہوتوتب بھی میرافیصلہ ہے،ہماری جماعت نے جب فیصلہ کر لیا تو اس میں میرا ووٹ شامل ہے،اخلاقی اور قانونی طور پر میرا ووٹ پارٹی  کا ہے۔

مزید : قومی