24 گھنٹوں میں 16 صوبے، 33 حملے، طالبان نے افغان سکیورٹی فورسز کو ہلا کر رکھ دیا

24 گھنٹوں میں 16 صوبے، 33 حملے، طالبان نے افغان سکیورٹی فورسز کو ہلا کر رکھ دیا
24 گھنٹوں میں 16 صوبے، 33 حملے، طالبان نے افغان سکیورٹی فورسز کو ہلا کر رکھ دیا

  



ننگر ہار (ڈیلی پاکستان آن لائن) امارت اسلامی افغانستان (طالبان) کی جانب سے افغان سکیورٹی فورسز پر حملے دوبارہ شروع کرنے کے اعلان کے اگلے ہی روز ایک حملے میں افغان پولیس کے 5 اہلکار ہلاک ہوگئے۔

برطانوی خبر رساں ادارے رائٹرز کے مطابق منگل کے روز صوبہ لوگر میں افغان سکیورٹی فورسز اور طالبان میں کاپر کی کان کے قریب شدید جھڑپیں ہوئی۔ لوگر کے گورنر کے ترجمان کا کہنا ہے کہ ا ن جھڑپوں میں افغان پولیس کے 5 اہلکار ہلاک ہوئے۔ افغان طالبان کے ترجمان کی جانب سے نہ تو حملے کی ذمہ داری قبول کی گئی ہے اور نہ ہی اس حوالے سے کوئی وضاحتی بیان دیا گیا ہے۔

افغان وزارت داخلہ کی ایک ترجمان نے بتایا کہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران طالبان کی جانب سے 16 صوبوں میں 33 حملے کیے گئے ہیں جن میں 6 عام شہری مارے گئے ہیں۔ انہوں نے یہ واضح نہیں کیا کہ ان حملوں میں افغان سکیورٹی فورسز کا کتنا نقصان ہوا ہے ۔

خیال رہے کہ امریکہ طالبان امن معاہدے کے باعث ایک ہفتے کیلئے عارضی جنگ بندی کی گئی تھی ، معاہدہ ہونے کے بعد پیر کے روز جنگ بندی ختم ہوگئی تھی جس کے بعد طالبان نے افغان سکیورٹی فورسز کو نشانہ بنانے کا اعلان کیا تھا۔

مزید : بین الاقوامی