سینیٹ انتخابات، تمام 37 نشستوں کے نتائج مکمل ، کس نے کہاں کامیابی سمیٹی ؟ تمام تفصیلات سامنے آگئیں

سینیٹ انتخابات، تمام 37 نشستوں کے نتائج مکمل ، کس نے کہاں کامیابی سمیٹی ؟ ...
سینیٹ انتخابات، تمام 37 نشستوں کے نتائج مکمل ، کس نے کہاں کامیابی سمیٹی ؟ تمام تفصیلات سامنے آگئیں

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) سینیٹ کی 37 نشستوں پر ہونے والے انتخاب کے مکمل نتائج سامنے آ گئے ہیں۔ مجموعی طور پر آج 48 نشستوں پر انتخابات ہونے تھے تاہم پنجاب کی 11 نشستوں پر پہلے ہی بلا مقابلہ انتخابات ہوچکے تھے جس کی وجہ سے بقیہ نشستوں پر آج انتخاب ہوا ہے۔ پنجاب میں پاکستان تحریک انصاف اور مسلم لیگ ن نے پانچ پانچ جبکہ مسلم لیگ ق نے ایک نشست پر کامیابی حاصل کی تھی۔

اسلام آباد

سینیٹ انتخابات کا سب سے بڑا اپ سیٹ قومی اسمبلی میں اسلام آباد کی جنرل  نشست پر ہوا ہے جہاں پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ کے مشترکہ امیدوار یوسف رضا گیلانی نے حکومتی امیدوار عبدالحفیظ شیخ کو شکست سے دوچار کیا۔ یوسف رضا گیلانی نے 169 جبکہ عبدالحفیظ شیخ نے 164 ووٹ حاصل کیے۔

زاہد محمود کی جادوئی گیند ،پال سٹرلنگ کا بلا ہی جام کردیا ،ویڈیو دیکھیں

اسلام آباد سے خواتین کی  نشست پر پاکستان تحریک انصاف کی فوزیہ ارشد کامیاب قرار پائی  ہیں  انہوں نے 174 ووٹ حاصل کیے جبکہ ان کی مد مقابل   ن لیگ کی فرزانہ کوثر نے 161 ووٹ حاصل کیے۔

بلوچستان

بلوچستان سے سینیٹ کی تمام 12 نشستوں کے نتائج موصول ہوچکے ہیں جن کے مطابق صوبائی حکمران اتحاد   کو آٹھ  جبکہ پی ڈی ایم کو چار نشستیں ملی ہیں۔ یہاں سے جنرل نشستوں پر باپ پارٹی کے منظور کاکڑ اور سرفراز کاکڑ کامیاب قرار پائے ہیں۔ باپ کے حمایت یافتہ آزاد امیدوار عبدالقادر بھی بلوچستان سے سینیٹر منتخب ہوگئے ہیں۔ اس کے علاوہ یہاں سے  متحدہ اپوزیشن کے مولانا عبدالغفور حیدری ، بلوچستان نیشنل پارٹی کےپرنس عمر احمد زئی،  محمد قاسم رونجھو ،  اے این پی کے ارباب عمر فاروق  جنرل نشستوں پر کامیاب قرار پائے ہیں۔ یہاں اے این پی کو باپ پارٹی کی حمایت حاصل  تھی۔

’بابر اعظم پاور ہٹر تو نہیں لیکن پھر بھی ۔۔۔‘فاف ڈوپلیسز نے پاکستانی کپتان کی حیران کن صلاحیت کے بارے میں بتا دیا 

بلوچستان سے ٹیکنو کریٹ کی نشستوں پر باپ کے سعید ہاشمی اور جے یو آئی کے کامران مرتضیٰ نے کامیابی حاصل کی ہے۔ خواتین کی نشستوں پر کامیابی باپ پارٹی کی ثمینہ ممتاز اور نسیمہ احسان کے حصے میں آئی۔ اقلیتی نشست پر یہاں سے باپ پارٹی کے دنیش کمار کامیاب ہوئے ہیں۔

سندھ

سندھ اسمبلی سے بھی سینیٹ کی تمام 11 نشستوں کے نتائج موصول ہوگئے ہیں جس کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی نے سات جبکہ تحریک انصاف اور متحدہ قومی موومنٹ نے دو، دو نشستوں پر کامیابی حاصل کی۔سندھ میں جنرل نشستوں پر پیپلز پارٹی کے سلیم مانڈوی والا، شیری رحمان، تاج حیدر، شہادت اعوان، جام مہتاب ڈہر جبکہ تحریک انصاف کے فیصل واوڈا اور ایم کیو ایم کے فیصل سبزواری کامیاب قرار پائے۔ خواتین کی نشست پر ایم کیوایم پاکستان کی خالدہ اطیب 57 ووٹ لے کر منتخب ہو ئی ہیں  جبکہ پیپلز پارٹی کی پلوشہ خان نے کامیابی سمیٹی۔ سندھ سے ٹیکنو کریٹ نشست پر پیپلز پارٹی کے فاروق ایچ نائیک اور تحریک انصاف کے سیف اللہ ابڑو کامیاب قرار پائے۔

پی ایس ایل کا چھٹا ایڈیشن کیسا چل رہا ہے اور سب سے زبردست بات کیا ہے؟ عبدالرزاق اور عبدالرحمان نے ایسی بات کہہ دی کہ بھارتی جل بھن جائیں

خیبر پختونخوا

خیبر پختونخوا اسمبلی سے بھی تمام 12 نشستوں کے نتائج موصول ہوگئے ہیں جن کے مطابق یہاں تحریک انصاف کا پلڑا بھاری رہا ہے۔ خیبر پختونخوا میں جنرل اسمبلی کی نشستوں پر پاکستان تحریک انصاف کے شبلی فراز، لیاقت ترکئی، محسن عزیز، فیصل سلیم ، ذیشان خانزادہ کامیاب قرار پائے ہیں۔ اس کے علاوہ جے یو آئی کے عطا الرحمان اور اے این پی کے ہدایت اللہ بھی جنرل نشست پر کامیاب ہوئے ہیں۔ ٹیکنو کریٹ نشستوں پر پی ٹی آئی کے دوست محمد اور ڈاکٹر محمد ہمایوں کامیاب قرار پائے ہیں جبکہ  اقلیتی نشست پر حکومتی امیدوار گردیپ سنگھ  کامیاب ہوئے ۔یہاں  سے خواتین کی نشستوں پر تحریک انصاف کی ثانیہ نشتر 56  اورفلک ناز چترالی 51 ووٹ لے کر کامیاب ہو گئی ہیں۔ 

کورونا وائرس کا شکار ہونے والے ٹام بینٹن نے پیغام جاری کر دیا

ووٹنگ کا وقت ختم ہونے کے بعد پانچ بجتے ہی قومی اسمبلی کے ہال کے دروازے بند کرکے الیکشن کمیشن کے عملے نے ووٹوں کی گنتی شروع  کردی۔اس وقت قومی اسمبلی کا ایوان 341 اراکین پر مشتمل ہے جن میں سے 340 ووٹ کاسٹ ہوئے۔ جماعت اسلامی کے رکن مولانا عبدالاکبر چترالی نے قومی اسمبلی میں کسی کوووٹ کاسٹ نہیں کیا۔ بلوچستان اسمبلی میں تمام 65 ارکان نے ووٹ کاسٹ کردیے ہیں جس کی وجہ سے یہاں بھی  ووٹوں کی گنتی شروع کردی گئی ہے۔سندھ اسمبلی میں تمام 167 ارکان نے ووٹ ڈالے  جس کے بعد یہاں بھی گنتی کا عمل شروع ہوچکا ہے۔

پی ایس ایل کی تاریخ کا مہنگا ترین اوور کرانے کا اعزاز کراچی کنگز کے باؤلر کے نام، یہ کون ہے اور ایک اوور میں کتنے رنز دئیے؟ جان کر آپ کی آنکھیں بھی کھلی کی کھلی رہ جائیں

خیبر پختونخوا اسمبلی میں 145 میں سے 128ووٹ  کاسٹ کیے جاچکے ہیں۔ اگرچہ ووٹنگ کا وقت ختم ہوچکا ہے لیکن اسمبلی میں موجود اکان اپنا ووٹ کاسٹ کرچکے ہیں۔ خیبر پختونخوا میں غلط نشان لگنے کی وجہ سے 13 حکومتی اراکین نے دوبارہ بیلٹ پیپر حاصل کیے۔

 پنجاب کی 11 نشستوں پر امیدوار بلامقابلہ منتخب ہوچکے ہیں۔ اسلام آباد کی 2، سندھ کی 11، خیبرپختونخوا کی 12 اور بلوچستان کی 12 نشستوں پر ووٹنگ ہوئی ۔ صوبوں کی نشستوں پر ارکان صوبائی اسمبلی نے ووٹ کاسٹ کیے جبکہ اسلام آباد کی 2 نشستوں پر ارکان قومی اسمبلی نے ووٹ کاسٹ کیے۔

پی ایس ایل کے لاہور میں شیڈول میچز بھی کراچی منتقل کئے جانے کا امکان مگر کیوں؟ لاہوریوں کیلئے افسوسناک خبر

وفاق اور صوبوں میں جنرل نشستوں پر 39 امیدوار آمنے سامنے ہیں، خواتین 18، ٹیکنو کریٹ 13 اور اقلیتی نشستوں پر 8 امیدوار مدمقابل ہیں۔ آئین کے مطابق سینیٹ انتخابات خفیہ بیلٹ کے ذریعے ہوئے۔اسلام آباد کی جنرل نشست پر پی ٹی آئی کے ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ اور پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے یوسف رضا گیلانی کے درمیان کانٹے کا مقابلہ متوقع ہے۔

قومی اسمبلی میں پی ٹی آئی کی اپنی 157 نشستیں ہیں، اتحادیوں میں ایم کیو ایم کی 7، مسلم لیگ ق کی اور بی اے پی کی 5، 5 جی ڈی اے کی 3، شیخ رشید کی عوامی مسلم لیگ اور جمہوری وطن پارٹی کی 1، 1 نشست جبکہ 1 آزاد امیدوار اسلم بھوتانی حکومت کے ساتھ کھڑے ہیں۔ اس طرح پاکستان تحریک انصاف کو قومی اسمبلی میں 180 ارکان کی حمایت حاصل ہے۔

لاہور قلندرز نے ڈیلی پاکستان کے ساتھ ڈیجیٹل میڈیا پارٹنرشپ کے معاہدے پر دستخط کر لیے

دوسری طرف متحدہ اپوزیشن کی جماعتوں میں سے مسلم لیگ ن کی 83، پیپلزپارٹی کی 55، متحدہ مجلس عمل پاکستان کی 15، اے این پی اور جماعت اسلامی کی 1،1 نشست جبکہ 3 آزاد امیدواروں کا ساتھ بھی حاصل ہے۔ متحدہ اپوزیشن کے مجموعی اراکین کی تعداد 161 بن جاتی ہے۔ یوں وفاق کی جنرل نشست پر اپوزیشن کو جیتنے کے لئے حکومتی اتحاد میں سے 10 ووٹ توڑنے ہوں گے۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -اسلام آباد -