یوسف رضا گیلانی کی فتح اور شہریار آفریدی کا ضائع ووٹ ، حامد میر نےتہلکہ خیز انکشاف کرتے ہوئے حکومت سے دو سوال پوچھ لئے

یوسف رضا گیلانی کی فتح اور شہریار آفریدی کا ضائع ووٹ ، حامد میر نےتہلکہ خیز ...
یوسف رضا گیلانی کی فتح اور شہریار آفریدی کا ضائع ووٹ ، حامد میر نےتہلکہ خیز انکشاف کرتے ہوئے حکومت سے دو سوال پوچھ لئے

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سینیٹ انتخابات کے نتائج آناشروع ہوگئےہیں،اسلام آباد کی سیٹ پر ڈاکٹرعبدالحفیظ شیخ اور یوسف رضا گیلانی کےدرمیان کانٹے کا مقابلہ ہوا اور اب تک کی سب سے بڑی خبر کے مطابق اپوزیشن کے متفقہ امیدوار نے وزیرخزانہ عبد الحفیظ شیخ کو شکست دے دی ہے،یوسف رضا گیلانی کی حیران کن فتح اور وزیرِ مملکت شہر یار آفریدی کا ووٹ ضائع ہونے پر ایک نئی بحث کا آغاز ہو گیا ہے جبکہ کہا جا رہا ہے کہ شہریارآفریدی کا ووٹ ضائع ہونے پر وزیراعظم عمران خان نے برہمی کا اظہار کیا ہے تاہم اب سینیئر صحافی اور تجزیہ کار حامد میر نےحکومت سے دو سوالات پوچھتے ہوئے ایسی بات کہہ دی ہے کہ ہر کوئی ششدر رہ جائے گا ۔

پشاور زلمی کے  کپتان نے میچ  ہارنے کی وجہ بتاتے ہوئے ٹیم کی دیگر خامیوں کی نشاندہی بھی کردی

نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے حامد میر نے انکشاف کیا کہ  اتفاق کی بات ہے کہ جب ووٹ ڈالنے کے لئے شہر یار آفریدی کا نام پکارا گیا تو میں پارلیمنٹ ہاؤس میں ہی موجود تھا ،وہاں کافی سارے صحافی موجود تھے ،ہمارے ایک دوست جن کا سندھی اخبار سے تعلق ہے ،اُنہوں نے سندھی زبان  میں اپنے دوسرے ساتھی سے کہا کہ دیکھنا اِس کی وزارت گئی ہے کہیں یہ بیچارہ کوئی غلطی نہ کر بیٹھے،اس سےپہلے آصف علی زرداری سےغلطی ہوئی تھی تو اُنہوں نےابھی تک ووٹ پول نہیں کیا تھاتو اُنہوں نےدوبارہ بیلٹ پیپر مانگا اور پھر صیح طریقے سے مہر لگا کر ووٹ دے دیا۔

کورونا وائرس کا شکار ہونے والے ٹام بینٹن نے پیغام جاری کر دیا

اُنہوں نے کہاکہ پول کرنےسےپہلے تک وہاں پرموجود ریٹرنگ آفیسرممبران کو فسیلٹیٹ کردیتاہےلیکن یہاں پر ایک بڑی دلچسپ بات ہےکہ شہریار آفریدی نےووٹ ڈالا اورپھر وہ چلے گئے،اب جو دستخط  اُنہوں نے کئے وہ تو کسی کو نظر نہیں آئے لیکن حکمران جماعت کی طرف سے یہ دعویٰ کیا گیا کہ شہریار آفریدی نے ووٹ ڈالنے کے دوران کوئی غلطی کی ہے،اُس کے بعد جب شہریار آفریدی سے پوچھا گیا تو اُنہوں نے کہا کہ ہاں میں نے تو  اس پر دستخط کر دیئے ہیں، اب یہاں پر دو سوال پیدا ہوتے ہیں ،پہلا سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ شہریار آفریدی نے جب ووٹ ڈالا اور اس پر دستخط کئے تو اُنہوں نے تو کسی کو نہیں بتایا،یہ پتا کس طرح چلا حکومت کو کہ جناب انہوں نے دستخط کر دیئے ہیں ؟کیا وہاں پر کوئی خفیہ کیمرے لگے تھے ؟اِس کا اُنہیں جواب دینا چاہئے کیونکہ یہ بات حکومت کی طرف سے سامنے آئی ہے ،پھر اس کے بعد شہر یار آفریدی نے کوشش کی کہ ان کو دوبارہ ووٹ ڈالنے کی اجازت دی جائے  لیکن جیسا کہ ہمیں بتایا گیا کہ ووٹ کو بیلٹ بکس میں ڈالنے سے پہلے اگرآپ ریٹرنگ افسر یا پھر پریذائڈنگ کو بتا دیں کہ میرے سے یہ غلطی ہوئی ہے تو وہ آپ کو دوسرا بیلٹ پیپر دے دیتا ہے ۔

مزید :

قومی -