پرانے کاریگروں سے نیا پاکستان نہیں بنے گا، گیلانی

پرانے کاریگروں سے نیا پاکستان نہیں بنے گا، گیلانی

  

 ملتان (نیوز   رپورٹر)سابق وزیر اعظم و قائد حزب اختلاف سینیٹ سید یوسف رضا گیلانی نے کہا ہے کہ لانگ مارچ نہیں عوام مارچ کر رہے ہیں،عمران خان پرانے کاریگر لے کر نیا پاکستان بنانے چلے تھے،پرانے کی بنیادیں ہی ہلادی ہیں،نااہل حکومت کے خلاف  عدم اعتماد کے بعد صاف شفاف انتخابات چاہتے ہیں اور پوری اپوزیشن متحد ہے،ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز صوبائی حلقہ 214  کے امیدوار ملک رضوان ہانس کی  جانب سے لانگ مارچ کے سلسلے میں منعقدہ ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا،اس موقع پر صوبائی حلقہ 214  کے امیدوار و تقریب کے میزبان ملک رضوان ہانس نے کہا کہ پیپلز پارٹی اس خطے کی محسن جماعت ہے اور اس خطے کے عوام بلاول بھٹو زرداری کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں،ملتان سیہزاروں کارکن اس تاریخی مارچ میں شرکت کے لئے تیارہیں،انہوں نے کہا کہ ملتان نے آمریت کے خلاف جہاد میں ہمیشہ تاریخ رقم کی ہے اور اب بھی ملتان کی عوام شہید بی بی کے بیٹے کے ساتھ مل کرموجودہ نااہل حکمرانوں کو گھر بھیج کر دم لیں گے،اس موقع پرملک شکیل لابر،ملک نسیم لابر،راو ساجد علی،اے ڈی بلوچ،سلیم راجہ،ملک طارق ہانس،صائمہ عامر خان،راضیہ رفیق،الطاف وہنس،رانا ذالفقار،ساجد بلوچ،سیلم الرحمن ودیگر نے بھی خطاب کیا،سید یوسف رضا گیلانی نے مزید کہا کہ کنٹینر پر کھڑے ہوکر کئے جانے والے تمام دعوے ہوا ہوگئے، معیشت کا بیڑہ غرق ہو گیا ہے، عوام کے معاشی، انسانی اور جمہوری حقوق غصب ہوچکے ہیں، خارجہ پالیسی ہو، معاشرہ ہو، سیاست ہو، گورننس ہو، سکیورٹی کا معاملہ ہو، حتی کہ عام آدمی کی زندگی کو اجیرن بنا دیا گیا ہے، موجودہ حالات کے پیشِ نظر پی پی پی نے فیصلہ کرلیا ہے کہ وہ عوام کے حقوق کے لیئے جدوجہد کرے گی پیپلز پارٹی نے ہمیشہ پاکستان کو محفوظ اور مضبوط بنایااورعوام کے حقو ق کی ہرممکن حفاظت کی،بلاول بھٹو زرداری اگر باہر نکلے ہیں تو وہ عوام کے دکھوں کا مداوا کرنے کے لئے باہر آئے ہیں ملتان کی عوام تین مارچ کو عوامی مارچ کا تاریخ ساز استقبال کریں گے اور عوامی سمندر ساتھ ہو گا، عوامی مارچ میں شامل ہزاروں شرکا کے قیام و طعام کے لئے ہم نے بہاولپور بائی پاس پر انتظامات کو حتمی شکل دے دی ہے، چالیس ہزارسے زائد لوگوں کے لیے کیمپ بھی لگادیئے گئے ہیں، انہوں نے کہا کہ ملتان سے بھی ہزاروں افراد قافلہ میں شامل ہوں گے اور پیپلز پارٹی کے لانگ مارچ کے اسلام آباد داخل ہونے سے قبل ہی جعلی حکومت کا خاتمہ ہو چکا ہوگا،انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی کے لانگ مارچ کے مثبت نتائج ابھی سے آنا شروع ہوگئے ہیں اور چوبیس گھنٹوں کے اندر حکومت عوام کو ریلیف دینیپر مجبور ہوگئی ہے،انہوں نے کہا کہ ساڑھے تین سال سے زائد گزرنے کے بعدبھی عمران خان کا یہ کہنا کہ یہ سابقہ حکومتوں نے کیا ہے،ایک مذاق کے سوا کچھ نہیں،اب عوام ان کے جھوٹیدعووں اور وعدوں کو جان چکی ہے، انہوں نے کہا کہ تین ماہ میں صوبہ بنانے والے کہتے ہیں ہمارے پاس اکثریت نہیں ہے، حکومت جو پاس کروانا چاہتی ہے اسے تو پاس کروا لیتی ہے،مگر صوبہ کے معاملہ میں ان کی بدنیتی واضح ہے،انہوں نے کہا کہ سب کو ساتھ لے کر چلنا حکومت وقت کی ذمہ داری ہوتی ہے،مجھے جب مدد کی ضرورت ہوتی،تب میں نواز شریف کے پاس چلا جاتا تھا،عمران خان کہتے ہیں میں نہیں چھوڑوں گایہ کام آپ کا نہیں نیب کا اداروں کا ہے میرے دور میں ایک بھی سیاسی قیدی نہیں تھاعمران خان تو ہمیں ڈاکو کہتے ہیں ایسے انسان سے کون ہاتھ ملائے گا،وزیر اعظم کے پہلے الفاظ تھے میں کینٹینر دیتا ہوں،اب وہ ڈر گئے ہیں،انہوں نے کہا کہ ہم لانگ مارچ نہیں عوام مارچ کر رہے ہیں، بلاول بھٹو زرداری اقتدار کی نہیں عوام کے حقوق کی جنگ لڑ رہے ہیں وہ دن دور نہیں جب اس نااہل حکومت سے عوام کو نجات دلائیں گے۔ملتان۔صوبائی حلقہ 214  کے امیدوار ملک رضوان ہانس کی جانب سے لانگ مارچ کے سلسلے میں منعقدہ ورکرز کنونشن سیسابق وزیر اعظم و قائد حزب اختلاف سینیٹ سید یوسف رضا گیلانی، ملک رضوان ہانس،ملک شکیل لابر،ملک نسیم لابر،راو ساجد علی،اے ڈی بلوچ،سلیم راجہ،ملک طارق ہانس،صائمہ عامر خان،راضیہ رفیق،الطاف وہنس،رانا ذالفقار،ساجد بلوچ،سیلم الرحمن ودیگر خطاب کر ر ہے ہیں۔

مزید :

صفحہ اول -