مفتی عبد اللطیف جلالی کی نماز جنازہ ادا، آبائی قبرستان میں سپرد خاک

  مفتی عبد اللطیف جلالی کی نماز جنازہ ادا، آبائی قبرستان میں سپرد خاک

  

لاہور(نمائندہ خصوصی) ممتاز عالم دین، شیخ الحدیث مفتی محمد عبد اللطیف جلالی کی نماز جنازہ گزشتہ روز ان کے آبائی گاؤں مانگٹ شریف میں ادا کر دی گئی اور انہیں ان کے آبائی قبرستان میں سپرد خاک کر دیا گیا۔ نماز جنازہ کی امامت صاحبزادہ محمد بدر الاسلام نے کی۔ نماز جنازہ میں ہزاروں افراد اور سینکڑوں علماء  و مشائخ نے شرکت کی۔ نماز جنازہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے تحریک لبیک یارسول اللہؐ کے سربراہ ڈاکٹر محمد اشرف آصف جلالی نے کہا کہ مفتی محمد عبد اللطیف جلالی نے ان طوفانوں میں کلمہء حق بلند کیا جب بڑے بڑے مفتیان کرام اور علماء مصلحت کا شکار ہو گئے۔ آپ نے امام اہل سنت پیر سید محمد جلال الدین شاہ صاحب نقشبندی نے پڑھنے کا بھی حق ادا کیا اور پڑھانے کا بھی حق ادا کیا۔ آپ نے عقیدہء معصومیت کے مسئلہ پر بندہء ناچیز اور مسلک اہل سنت کی حمایت میں بڑے بڑے سجادہ نشینوں اور نام نہاد پیروں سے ٹکر لے لی۔ آپ نے آخری سانس تک ایک عالم ربانی کا کردار ادا کیا۔ 

ٹی ایل آئی کے ترجمان مولانا محمد جمیل بیگ جلالی کے مطابق مفتی محمد عبد اللطیف جلالی کا ایک ویڈیو بیان سوشل میڈیا پر وائرل کیا گیا ہے جس میں آپ نے واشگاف الفاظ میں کہا کہ میرا وہی مسلک اور عقیدہ ہے جو ڈاکٹر محمد اشرف آصف جلالی کا ہے۔ سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والے بیان میں آپ نے یہ بھی کہا: عصرِ حاضر میں اکابرینِ اْمت کے منہج پر قائم رہ کر ہر محاذ پر فتنوں کا ڈٹ کے مقابلہ کرنے والی میرے نزدیک صرف ڈاکٹر محمد اشرف آصف جلالی کی شخصیت ہے جن میں ہر لحاظ سے قابلیت اور صلاحیت موجود ہے۔ نماز جنازہ میں شیخ الحدیث حافظ محمد کریم بخش جلالی، حافظ محمد نذیر احمد گوندل، پیر محمد امین اللہ نبیل سیالوی، علامہ فرمان علی حیدری، علامہ عبد الرشید اویسی، علامہ محمد بشیر مصطفوی، پیر سید محمد عمر سلیم حسینی، قاضی محمد الیاس جلالی، علامہ محمد افضل باجوہ سمیت کثیر تعداد میں علماء نے شرکت کی۔ آپ کے صاحبزادگان مولانا محمد احمد رضا جلالی، مولانا محمد انیس جلالی، مولانا محمد عبد السبحان جلالی اور مولانا محمد محسن جلالی نے شرکائے نمازِ جنازہ کا شکریہ ادا کیا۔ 

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -