اسلام آباد ہائیکورٹ نے بھارت کو کلبھوشن یادیو کیلئے وکیل فراہمی کا ایک اور موقع دیدیا

اسلام آباد ہائیکورٹ نے بھارت کو کلبھوشن یادیو کیلئے وکیل فراہمی کا ایک اور ...
اسلام آباد ہائیکورٹ نے بھارت کو کلبھوشن یادیو کیلئے وکیل فراہمی کا ایک اور موقع دیدیا

  

اسلام آباد ( ڈیلی پاکستان آن لائن ) اسلام آباد ہائیکورٹ  میں  بھارتی جاسوس کلبھوشن کو وکیل فراہمی سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی ،  عدالت نے بھارت کو کلبھوشن کیلئے وکیل فراہمی کا ایک اور موقع دیدیا۔

نجی ٹی وی ہم نیوز کے مطابق  چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ جسٹس اطہر من اللہ نے بھارتی جاسوس کلبھوشن کو وکیل کی  فراہمی سے متعلق کیس کی سماعت کی ، اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ  3دسمبر 2021 کو پارلیمنٹ سے ایکٹ منظور کیا گیا،ایکٹ کے مطابق وزارت قانون غیرملکی سے متعلق درخواست دائر کر سکتی ہے،بھارت کلبھوشن یادیو کو وکیل فراہم کرنے میں دلچسپی نہیں رکھتا،بھارت چاہتا ہے کہ یہ کارروائی رک جائے۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیے کہ عالمی عدالت انصاف نے پشاور ہائیکورٹ کا حوالہ دیا تھا،ایسا لگتا ہے بھارت کو عالمی عدالت انصاف کا فیصلہ ٹھیک سے سمجھ نہیں آیا،پشاور ہائیکورٹ نے ایک کیس میں کورٹ مارشل کا آرڈر کالعدم قرار دیا تھا،شفاف ٹرائل کے جو اصول ہیں یہ عدالت انکو یقینی بنائے گی، عدالت اس نتیجے پر پہنچی کہ کلبھوشن کو سزا قانون کے مطابق نہیں ملی تو کالعدم قرار دیگی، اس عدالت کو کارروائی کیسے آگے بڑھانی چاہیے؟، پاکستان بھار ت کو موقع دے چکا کہ وہ اسلام آباد ہائیکورٹ سے رجوع کر سکتے ہیں۔

اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ  پاکستان نے ایک آرڈیننس جاری کیا اور پارلیمنٹ نے اسے ایکٹ بنایا، بھارت کہتا ہے کہ پاکستان نے جو آرڈیننس اور ایکٹ بنایا وہ صحیح نہیں ۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے بھارت کو کلبھوشن کیلئے وکیل فراہمی کا ایک اور موقع فراہم کرتے ہوئے کیس کی سماعت   13 اپریل تک ملتوی کر دی۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -