اپنے سونے کے وقت میں بھی روزانہ 30 منٹ کی کمی کر دیجئے، اکثر لوگ اپنی بیزاری دور کرے کے لیے زیادہ سونے کی کوشش کرتے ہیں 

 اپنے سونے کے وقت میں بھی روزانہ 30 منٹ کی کمی کر دیجئے، اکثر لوگ اپنی بیزاری ...
 اپنے سونے کے وقت میں بھی روزانہ 30 منٹ کی کمی کر دیجئے، اکثر لوگ اپنی بیزاری دور کرے کے لیے زیادہ سونے کی کوشش کرتے ہیں 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

مصنف:ڈاکٹر ڈیوڈ جوزف شیوارڈز
ترجمہ:ریاض محمود انجم
 قسط:17
میں نے اپنے دوست کے اس مؤقف سے اتفاق کیا کہ ہمارے پاس پہلے ہی وکیلوں کی بہت بڑی کھیپ موجود ہے۔ پھر میں نے اس سے پوچھا کہ ”کیا وہ واقعی وکیل بننے کا خواہش مند ہے؟“ اس نے جواب دیا: ”یہ میری سب سے بڑی خواہش ہے، میں ایک مشہور وکیل بننا چاہتا ہوں لیکن میرے پاس صرف اتنی رقم موجود ہے کہ قانون کی تعلیم میں کسی جز وقتی سکول میں حاصل کر سکوں، میرے3 بچے ہیں جن کے اخراجات بھی میرے ذمے ہیں۔“
میں نے اسے یقین دلایا کہ اس قسم کے نام نہاد قانون کی تعلیم دینے والے سکولوں سے ڈگری حاصل کرنے والے افراد مشہور قانونی اداروں میں ملازمت حاصل کرلیتے ہیں لیکن ضروری نہیں کہ یہ لوگ بہترین وکیل بھی بن جائیں۔ میرے دوست کو یہ معلوم کرکے بہت حیرانی ہوئی کہ امریکی سپریم کورٹ کے زیادہ تر اراکین بہت ہی معمولی اور گم نام سکولوں سے فارغ التحصیل ہیں۔ میرے اس دوست نے اپنے اس خواب کو عملی شکل دینے کے لیے جز وقتی سکول میں داخلہ لے لیا اور اب اس وقت وہ نہایت تیزی سے اپنے خواب کی تعمیر کی طرف بڑھ رہا ہے۔
آپ کے خواب چکنا چور کرنے والے افراد کی پانچویں قسم: اس قسم کے افراد آپ کو مسلسل یاد دلاتے رہتے ہیں کہ آپ کے پاس اضافی وقت نہیں ہے۔ لوگوں کے لیے بہت سے ایسے مواقع موجود ہوتے ہیں جن کے ذریعے وہ اپنے فالتو وقت میں بہت سے ایسے کام کر سکتے ہیں کہ وہ اپنی دولت اور آمدنی میں اضافہ کرنے کے علاوہ زندگی کی دیگر تفریحات اور دلچسپیوں سے لطف اندوز ہوسکیں، اور ان کاموں کے باعث ان کی باقاعدہ ملازمت یا کاروبار کو بھی کوئی نقصان نہیں پہنچتا۔ لیکن پھر بھی آپ اپنے فالتو اور اضافی وقت میں جب کبھی بھی ہزاروں ڈالر سالانہ کمانے کا سوچتے ہیں اور اپنے اس خواب کا اظہار اپنے دوستوں سے کرتے ہیں تو اس وقت بھی وہ دوست جو آپ کے خواب چکنا چور کر دینا چاہتے ہیں، یہی کہتے ہیں کہ آپ کے پاس وقت نہیں ہے۔
آئیے، اب میں آپ کو جم (Jim) اور الائس (Alice) کے متعلق بتاتا ہوں کہ کس طرح انہوں نے ایک نہایت ہی منافع بخش جز وقتی کاروبار قائم کرنے کے لیے وقت نکالا۔ جم ایک بنک میں ملازم تھا اور الائس ایک انشورنش کمپنی میں کمپیوٹر آپریٹر تھی۔ انہیں اپنا ذاتی کاروبار شروع کرنے کا موقع حاصل ہوگیا۔ اس ضمن میں یہ دونوں افراد میرے پاس آئے تاکہ فالتو اور اضافی وقت نکالنے کا طریقہ معلوم کرسکیں۔ اس ضمن میں، میں نے انہیں مندرجہ ذیل 5 تجاویز دیں۔
1 :ٹی وی دیکھنے کے وقت میں روزانہ کے حساب سے30 منٹ کمی کر دیں۔ اس وقت وہ اوسطاً ساڑھے تین گھنٹے ٹی وی دیکھتے تھے۔ ٹی وی دیکھنے کے اوقات میں روزانہ30 منٹ کمی کے باعث ان کے پاس1 ہفتے میں 18گھنٹے کا وقت اضافی بچ گیا۔
2 :روزانہ اخبار کا مطالعہ بند کر دیجئے۔ ہفتے بھر کی خبریں ایک سی ہوتی ہیں۔ اخبار کا روزانہ مطالعہ ترک کرنے کے باعث آپ کے پاس مزید 30 منٹ اضافی بچ گئے یعنی 1 ہفتے میں 3 گھنٹے آپ کو فالتو فراہم ہوگئے۔
3 :اپنے سونے کے وقت میں بھی روزانہ 30 منٹ کی کمی کر دیجئے۔ اکثر لوگ اپنی بیزاری دور کرے کے لیے زیادہ سونے کی کوشش کرتے ہیں۔
4 :اپنے دفتروں میں اپنے افسران سے درخواست کیجئے کہ وہ ان کے لنچ بریک کا وقت1 گھنٹے سے کم کرکے آدھ گھنٹہ کر دیں اور انہیں نصف گھنٹہ جلد گھر چلے جانے کی اجازت دے دیں۔ یعنی 5 دنوں کے حساب ہے آپ کے پاس اڑھائی گھنٹے اضافی مہیا ہوگئے۔
5 :اپنے ان دوستوں کے ساتھ ملاقاتوں کا وقت کم کر دیجئے جو محض گپ شب کے لیے آپ سے ملاقات کرتے ہیں۔ دوستوں کے ساتھ گپ شپ ختم کرنے کے باعث1 ہفتے میں ڈیڑھ گھنٹہ پر مشتمل اضافی وقت آپ کے پاس مہیا ہو جائے گا۔
ان تمام طرائق کا نتیجہ یہ نکلا کہ ان کے پاس ایک ہفتے میں مجموعی طور پر ساڑھے اٹھائیس گھنٹے فالتو اضافی میسر اور مہیا ہوگئے، یہ وقت ان کے لیے مناسب اور کافی تھا کہ وہ اس وقت بھی ایک جز وقتی کاروبار نہایت آسانی کے ساتھ شروع کر سکتے تھے۔ مالی خوشحالی کے حصول کے متعلق ان کا خواب حقیقت کا روپ دھار رہا تھا، کیونکہ انہوں نے لوگوں کی طرف سے ”آپ کے پاس وقت نہیں ہے“ سننے سے انکار کرکے اپنے مقصد کے حصول میں موجود تمام رکاوٹیں دُور کردیں۔(جاری ہے)
نوٹ: یہ کتاب ”بُک ہوم“ نے شائع کی ہے (جملہ حقوق محفوط ہیں)ادارے کا مصنف کی آراء سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

مزید :

ادب وثقافت -