پاکستانی کرکٹرز کی کیریبیئن پریمیئر لیگ میں شرکت پر سوالیہ نشان لگ گیا

پاکستانی کرکٹرز کی کیریبیئن پریمیئر لیگ میں شرکت پر سوالیہ نشان لگ گیا

  



 لاہور(آن لائن) پاکستانی کرکٹرز کی کیریبیئن ٹوئنٹی 20پریمیئر لیگ میں شرکت پر سوالیہ نشان ثبت ہوگیا۔ جولائی، اگست میں دورہ سری لنکا طے پانے کی وجہ سے محمد حفیظ، سعید اجمل اور احمد شہزادکو این او سی جاری نہ کیے جانے کا امکان ہے۔تفصیلات کے مطابق پاکستانی کرکٹرز نے بورڈ کی اجازت سے کیریبیئن ٹوئنٹی 20پریمیئر لیگ میں کھیلنے کیلیے مختلف فرنچائزز سے معاہدے کیے،اپریل میں پلیئرز کی نیلامی میں محمد حفیظ کو گیانا امیزون نے 80 اور احمد شہزادکو دفاعی چیمپئن جمیکا تلاواز نے 70ہزار ڈالر میں خریدا،سہیل تنویر کا سینٹ لوشیا زوکس کے ساتھ 50ہزار ڈالر میں کنٹریکٹ ہوا، ایئیکون پلیئر کی حیثیت سے سعید اجمل پہلے ہی اینٹگا ہاکس بلز کی نمائندگی کیلیے منتخب ہو چکے تھے۔گذشتہ ایڈیشن میں شعیب ملک بارباڈوس ٹرائیڈنٹس کی طرف سے کھیلتے ہوئے ایونٹ کے ٹاپ اسکورر رہے تھے، آل راﺅنڈر کے ساتھ عمران نذیر رواں سال بھی اسی ٹیم کی نمائندگی کرینگے، ناصر جمشید کو ٹرینیڈاڈ اینڈ ٹوباگو ریڈ اسٹیل کا حصہ بنایا گیا۔ان دنوں ووسٹر شائر کی نمائندگی میں مصروف سعید اجمل نے انگلش کاﺅنٹی سے معاہدہ کرتے ہوئے جولائی اگست میں کیریبیئن پریمیئر لیگ کیلیے رخصت کی شرط رکھی تھی، جس کے بعد 6ہفتوں کیلیے ان کا خلا نیوزی لینڈ کے مچل میکلیگن سے پ±ر کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ آئی سی سی اجلاس کے دوران جولائی اگست میں پاکستان کے دورئہ سری لنکا کے معاملات طے پانے کے بعد صورتحال مختلف ہوگئی۔ آئی لینڈرز سے سیریز کی تیاری کیلیے کنڈیشننگ کیمپ 6مئی سے لاہور میں شروع ہوگا،دوسرے مرحلے میں کاﺅنٹی کرکٹ کھیلنے میں مصروف اسٹارز سمیت 25 پلیئرزکو بلایا جائیگا،ان حالات میں 5جولائی سے 10اگست تک شیڈول کیریبیئن پریمیئر لیگ میں محمد حفیظ، سعید اجمل، احمد شہزاد اور سعید اجمل سمیت چند اہم پاکستانی کرکٹرز کو این او سی نہ دیے جانے کا قوی امکان ہے۔

بورڈ ذرائع کے مطابق شیڈول میں ٹکراﺅکی وجہ سے ہمیشہ کی طرح پلیئرز کی قومی ذمہ داریوں کیلیے دستیابی یقینی بنانے کو ترجیح دی جائے گی،اس سے قبل سعید اجمل کو بھی کاﺅنٹی کھیلنے کی مشروط اجازت دی گئی تھی۔

مزید : میٹروپولیٹن 3


loading...