پاکستان اور ترکی کا تکنیکی ورکنگ گروپ قائم کرنے پر اتفاق

پاکستان اور ترکی کا تکنیکی ورکنگ گروپ قائم کرنے پر اتفاق

  



انقرہ (اے پی پی) پاکستان اور ترکی نے توانائی کے شعبہ میں قریبی تعاون کے جائزہ کیلئے توانائی کے شعبے میں ٹیکنیکل ورکنگ گروپ قائم کرنے پر اتفاق کیا ہے۔ یہ فیصلہ انقرہ میں وزارت پانی وبجلی کے سیکرٹری سیف اللہ چٹھہ اور ترک حکام کے درمیان ملاقات کے دوران کیا گیا۔ وزیراعظم محمدنوازشریف کی ہدایت پر سیکرٹری وزارت پانی وبجلی ترکی کا دورہ کر رہے ہیں جس کا مقصد توانائی کے شعبہ کی نجکاری کیلئے ترکی کے تجربہ سے استفادہ کرنا ہے۔ پاکستان ہائیڈل پراجیکٹس کی نجکاری کا منصوبہ رکھتا ہے جبکہ ترکی نے بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کی 100 فیصد نجکاری کامیابی سے مکمل کی۔ پاکستانی وفد نے ترک وزارت توانائی و قدرتی وسائل کے سیکرٹری متین کلسن کے ساتھ تفصیلی ملاقات کی جنہوں نے پاکستان کو ترکی میں ایک روڈ شو منعقد کرنے کیلئے تعاون کی پیشکش کی جہاں پاکستان ترک سرمایہ کاروں کو نجکاری کے شعوبوں کے متعلق آگاہ کرسکتا ہے اور توانائی کے مختلف منصوبوں ، ہائیڈرل، کول اور متبادل توانائی کے پراجیکٹس کیلئے سرمایہ کاری کی ترغیب دے سکتا ہے۔ ترک وزارت توانائی و قدرتی وسائل کے سیکرٹری نے کہا کہ ترکی نے بجلی کے شعبہ کی نجکاری کے ذریعہ 50 ارب ڈالر کی آمدن حاصل کی۔

 اور اس نجکاری کے ذریعے سرکاری شعبہ کو ماہانہ 10 ارب ڈالر کی بچت ہو رہی ہے جو قبل ازیں بجلی کے اد اروں کے باعث آٹھ رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ نجکاری کے باعث لائن لاسز میں بھی کمی ہوئی ۔ سرکاری ادارہ ہائیڈرانک ورکس یاکوپ کے ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل باسو گولر نے ملاقات کے دوران بتایا کہ ترک سرمایہ کاری کا ہائیڈل منصوبوں میں بڑا تجربہ ہے اور ترک سرمایہ کاری پاکستان میں ایسے منصوبوں میں سرمایہ کاری کیلئے زیادہ دلچسپی رکھتے ہیں۔ ترکی کی وزارت پرائیویٹائزیشن ایڈمنسٹریشن کے صدر رحمت اکسو نے بجلی کے شعبہ کی نجکاری کے متعلق تفصیلی بریفنگ دی۔

مزید : کامرس


loading...