ملک بھر میں دھاندلی ہوئی تو پھر عمران صوبائی حکومت بھی چھوڑ دیں، پرویز رشید

ملک بھر میں دھاندلی ہوئی تو پھر عمران صوبائی حکومت بھی چھوڑ دیں، پرویز رشید

  



 لاہور(جاوید اقبال ) وفاقی وزیر برائے اطلاعات و نشریات سینٹر پرویز رشید نے کہا ہے کہ اگر عمران خان کے مطابق عام انتخابات کے وقت ملک بھر میں بد ترین دھاندلی ہوئی تھی تو پھر عمران خان کی صوبہ خیبر پی کے میں حکومت بھی تو اسی انتخابات کی صورت میں ہی وجود میں آئی ہے کیا انکی حکومت بھی دھاندلی کی پیدوار ہے ، انہیں اس رو سے کے پی کے کی حکومت اور پارلیمنٹ میں رہنے کا حق حاصل نہیں ہے وہ فوری طور پر صوبہ خیبر پی کے کی حکومت اور اسمبلیوں سے استعفے دیں اور باہر آ کر سڑکوں پر احتجاج کرنے کا شوق بھی پورا کر لیں جس طرح وہ اپنا مقدمہ عدالت میں ہارے ہیں اسی طرح وہ عوام کی عدالت میں بھی ہار جائیں گے ،اگر انہیں شکایات ہیں تو وہ ثبوت کے ساتھ اسمبلی کے فلور پر لائیں وگرنہ اسمبلیوں سے فوری استعفے دیدیں ایک ٹکٹ سے دو دو مزے نہ لیں ۔وہ ’’پاکستان‘‘ سے گفتگو کررہے تھے ۔سینٹر پرویز رشید نے کہا کہ عمران خان کا شروع سے وطیرہ رہا ہے کہ وہ منفی سیاست کرتے ہیں انہیں عام انتخابات میں عوام نے مسترد کیا (ن) لیگ نے نہیں انہیں چاہئے کہ وہ وقت کا انتظار کریں مسلم لیگ کی حکومت عوام کے ووٹ کی مدد سے بنی ہے تحریک انصاف کی مدد سے نہیں ملک میں پارلمنٹ موجود ہے آزاد عدلیہ بھی موجود ہے اور تمام ادارے مستحکم ہو رہے ہیں انہیں چاہئے کہ وہ سڑکوں پر آنے کی بجائے پارلمنٹ کے اندر اپنا مقدمہ لائیں اگر نہیں تو جس طرح سے وہ اپنا مقدمہ قانون کی عدالت میں ہارے ہیں ٹھیک اسی طرح سے وہ اپنا مقدمہ عوام کی عدالت میں بھی ہارے گے ۔وفاقی وزیر نے کہا کہ اب تک عمران خان جس دھاندلی کا شور مچا رہے ہیں اس کا عدالت سے ایک فیصلہ آیا ہے جو تحریک انصاف کے خلاف آیا ہے دھاندلی کی نشاندہی کی زد میں تحریک انصاف کا اپنا امیدوار ہی آیا اور گنتی میں مسلم لیگ (ن) کے امیدوار کامیاب قرار پائے ۔ اس رو سے دھاندلی تو مسلم لیگ (ن) کے خلاف ہوئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں جمہوریت ہے اور ہر شخص کو اپنی آواز بلند کرنے کا حق حاصل ہے اور وہ اس میں آزاد ہے لیکن عمران خان ایک بڑے صوبے میں حکومت کررہے ہیں اور اقتدار میں مزے لے رہے ہیں دوسری طرف پارلمنٹ میں بھی موجود ہیں اگر انہیں سڑکوں پر ہی آنا ہے تو اپنا شوق ضرور پورا کریں مگر پہلے حکومت اور اسمبلیوں سے استعفے دیں ۔

مزید : صفحہ اول