پاکستان میں صحافت پر پابندی اور صحافیوں پر حملے قابل قبول نہیں، امریکی محکمہ خارجہ

پاکستان میں صحافت پر پابندی اور صحافیوں پر حملے قابل قبول نہیں، امریکی محکمہ ...

  



واشنگٹن (آئی این پی) امریکی محکمہ خارجہ نے کہا ہے کہ پاکستان میں صحافت پر پابندی اور صحافیوں پر حملے قابل قبول نہیں، یہ پاکستانی جمہوریت کے چہرے پر سیاہ دھبے جیسا ہے،پاکستان دنیا بھر میں صحافیوں کیلئے خطرناک ترین ملک بن گیا ہے،امریکا اس معاملے میں کسی صورت بھی پاکستان کو ڈکٹیٹ نہیں کرنا چاہتا، ہم ایک دوست کے ناطے پاکستان کو صحافیوں کی حفاظت کی اہمیت کا احساس دلانا چاہتے ہیں۔جمعہ کو امریکی محکمہ خارجہ کے اسسٹنٹ سیکریٹری ڈوگلس فرانٹز نے کہا کہ جس ملک میں نامور صحافیوں پر قاتلانہ حملے ہوں، وہاں صحافت کو آزاد قرار نہیں دیا جاسکتا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں صحافیوں پر قاتلانہ حملے سانحے کی طرح ہیں،امریکہ کیلئے صحافت پر پابندی اور صحافیوں پر حملے کسی طور قابل قبول نہیں،امریکا نے صحافیوں پر حملے کا معاملہ پاکستان حکومت کے ساتھ بات چیت میں اٹھایا۔ڈوگلس فرانٹزنے کہا کہ میرے خیال میں پاکستان دنیا بھر میں صحافیوں کیلئے خطرناک ترین ملک بن گیا ہے، یہ بڑی بدقسمتی کی بات ہے، یہ پاکستانی جمہوریت کے چہرے پر سیاہ دھبے جیسا ہے ، گزشتہ ماہ صحافی حامد میر پر ہونے والا حملہ بھی کسی سانحہ سے کم نہیں، امریکی دفتر خارجہ کے حکام پاکستانی ہم منصبوں کے سامنے صحافیوں کی حفاظت کے معاملے کو بارہا اٹھاچکے ہیں، ہم پاکستان کا موقف بھی سنتے ہیں، امریکا اس معاملے میں کسی صورت بھی پاکستان کو ڈکٹیٹ نہیں کرنا چاہتا۔ ہم ایک دوست کے ناطے پاکستان کو صحافیوں کی حفاظت کی اہمیت کا احساس دلانا چاہتے ہیں

مزید : صفحہ اول


loading...