ٹیکسٹائل برآمدات کا ہدف 26 ارب ڈالرکرنے سے معیشت ترقی کریگی، عباس آفریدی

ٹیکسٹائل برآمدات کا ہدف 26 ارب ڈالرکرنے سے معیشت ترقی کریگی، عباس آفریدی

  



لاہور (کامرس رپورٹر) وفاقی وزیر ٹیکسٹائل عباس خان آفریدی نے کہا ہے کہ حکومت کی جانب سے ٹیکسٹائل برآمدات 13 ارب ڈالر سے بڑھا کر 26 ارب ڈالر تک لے جانے کا ہدف مقررکرنے کے بعد پاکستان میں روزگار کے نئے مواقع پیدا ہوں گے جس سے غربت میں کمی آئے گی اور برآمدات بڑھنے سے معیشت ترقی کرے گی۔وہ گزشتہ روز آ ل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی ایشن کے پنجاب دفتر میں پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے، اس موقع پر وفاقی سیکرٹری ٹیکسٹائل رخسانہ شاہ، چیئرمین اپٹما پنجاب ایس ایم تنویر اور ٹیکسٹائل کے صنعتکاروں کی کثیر تعداد موجود تھی۔انہوں نے کہا کہ سی این جی اور گیس کی تقسیم کی پالیسی پر نظرثانی کی ضرورت ہے، کیونکہ گیس کا بہترین استعمال وقت کی اہم ضرورت ہے۔ وفاقی وزیر کا مزید کہنا تھا کہ گیس پبلک ٹرانسپورٹ اور صنعتی شعبے کو فراہم کی جانی چاہیے اور وہ اس سلسلے میں حکومت کو تجاویز بھجوائیں گے۔ انہوں نے ٹیکسٹائل کے صنعتکاروں پر زور دیتے ہوئے کہا کہ انہیں ویلیو ایڈڈ مصنوعات کی برآمد کو فروغ دینا چاہیے تاکہ بین الاقوامی منڈیوں میں پاکستان اس حوالے سے مشہور ہو کہ یہاں بہترین معیار کی اشیاءبنتی ہیں۔ بھارت اور بنگلہ دیش کی مثال دیتے ہوئے عباس خان آفریدی نے کہا کہ ان دونوں ممالک نے ٹیکسٹائل کی صنعت کو فروغ دے کر نہ صرف اپنے اپنے روزگار کے نئے مواقع پیدا کئے ہیں، بلکہ اس سے ان ممالک کی معیشت کو بھی بہت فائدہ پہنچا ہے۔ انہوں نے سال 2015ءکو ٹیکسٹائل انڈسٹری کا سال قرار دینے کی تجویز پیش کی۔ قبل ازیں اپٹما کے عہدیداروں نے وفاقی وزیر کو ٹیکسٹائل کی صنعت کو درپیش مشکلات کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی۔

عباس آفریدی

مزید : صفحہ آخر


loading...