ماں کا دودھ پینے والے بچے دمے سے محفوظ

ماں کا دودھ پینے والے بچے دمے سے محفوظ
ماں کا دودھ پینے والے بچے دمے سے محفوظ

  



لندن (بیورونیوز) گزرتے وقت کے ساتھ ہمارے خیالات و نظریات بدلتے رہتے ہیں۔ ایک وقت تھا کہ بچوں کیلئے ماں کے دودھ کو افضل ترین غذا سمجھا جاتا تھا لیکن اب ڈبے کا مصنوعی دودھ بچوں کو پلانا ایک فیشن بنتا جارہا ہے۔ جدید سائنس نے یہ ثابت کردیا ہے کہ بچوں کو ماں کا دودھ بغیر کسی مناسب وجہ کے نہ پلانا ان کی صحت کیلئے خطرات کا باعث بن سکتا ہے اور یہ کہ ماں کا دودھ پینے والے بچے کئی بیماریوں سے محفوظ رہتے ہیں۔ برطانیہ کی یونیورسٹی کیمپس سفلک کی ایک رپورٹ جو کہ امریکن جرنل آف ایپی ڈی مولوجی میں چھپی ہے، میں بتایا گیا ہے ماں کا دودھ باقاعدگی سے پینے والے بچوں مین تین سال کی عمر تک پہنچنے کے دوران دمہ کا مرض لاحق ہونے کا خطرہ 37 فیصد کم ہوجاتا ہے۔ اس تحقیق میں 30 سال کے دوران پیش کئے گئے 117 سائنسی مقالوں کا جائزہ لیا گیا جن میں تقریباً ڈھائی لاکھ بچوں میں ماں کا دودھ پینے اور دمے کے مرض سے بچاؤ کے درمیان تعلق کا مطالعہ کیا گیا تھا۔ تحقیق سے یہ بھی معلوم ہوا کہ ماں کا دودھ پینے والے بچے جب سات سال یا اس سے زائد عمر کے ہوجائیں تب بھی ان میں دمے کا شکار ہونے کا خطرہ دوسرے بچوں کی نسبت 17 فیصد کم ہوتا ہے۔

مزید : تعلیم و صحت