سپیشل افراد نے پرفارمنس کا مظاہرہ کرکے تقریب کو چار چاند لگادئیے

سپیشل افراد نے پرفارمنس کا مظاہرہ کرکے تقریب کو چار چاند لگادئیے

پنجاب یونیورسٹی کے زیر اہتمام دو روزہ سالانہ سپورٹس گالا 2015ء

خصوصی بچے ہمیشہ خاص توجہ کے مستحق ہوتے ہیں اور ان میں عام لوگوں کی طرح بھرپور صلاحیتیں بھی موجود ہوتی ہیں بس ان کو محنت سے نکھارنے کی ضرورت ہے ہمار ے ملک میں ایسے بچوں کی کمی نہیں ہے جس پر ہمیں خصوصی توجہ دینے کی ضرورت ہے اور اگر ہم اس حوالے سے اپنا بھرپور کردار ادا کریں تو ہم ان کو بھی عام افراد کی طرح منظر عام پر لاسکتے ہیں ان کی حوصلہ افزائی کی اشد ضرورت ہوتی ہے۔ اسی کی کڑی پنجاب یونیورسٹی کے شعبہ سپیشل ایجوکیشن کے زیر اہتمام دو روزہ سالانہ سپورٹس گالا 2015ء کا انعقاد کیا جانا تھا تاکہ ایسے بچوں کو منظر عام پر لایا جاسکے اور اس ایونٹ میں ان کی جس طرح سے بھرپور پزیرائی کی گئی اور ان کی خصوصیات پر روشنی ڈالی گئی اس بات کا واضح ثبوت ہے کہ اس سے ان کو مستقبل میں ضرور فائدہ حاصل ہوگا اس موقع پر مہمان خصوصی کے فرائض ڈین فیکلٹی آف لاء پنجاب یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر شازیہ نورین قریشی کیا ااور انہوں نے مزید کہا کہ خصوصی افراد میں ٹیلنٹ کی کمی نہیں ہوتی۔ اللہ نے انہیں مختلف صلاحیتوں سے نواز رکھا ہے۔ تقریب میں ڈین فیکلٹی آف ایجوکیشن پروفیسر ڈاکٹر ممتاز اختر، انچارج شعبہ ڈاکٹر حمیرا بانو، اسسٹنٹ پروفیسرڈاکٹر حنا فاضل، ڈین فیکلٹی آف لائف سائنسز پروفیسر ڈاکٹر نعیم خان، انچارج آئی سی ایس ڈاکٹر نوشینہ سلیم، چیف میڈیکل آفیسر ڈاکٹر نعمان احمد،سینئر فیکلٹی ممبران اور طلباء و طالبات کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پروفیسر ڈاکٹر شازیہ نورین قریشی نے کہا کہ خصوصی طلباء و طالبات میں کھیلوں کا جذبہ دیکھ کر بہت خوشی محسوس ہو رہی ہے، خصوصی بچے بلند حوصلہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ خصوصی بچوں کا خیال رکھنے کے لئے ہر شخص کو اپنا کردار ادا کرنا چاہئے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر حمیرا بانو نے کہا کہ خصوصی افراد کے لئے پالیسیاں تو بنتی ہیں مگر ان پر عملدرآمد نہیں ہو رہا۔ اس موقع پر شعبہ سپیشل ایجوکیشن میں کھیلوں کے کامیاب انعقاد پر اسسٹنٹ پروفیسر حنا فاضل کی کاوشوں کو سراہا گیا اور کہا کہ جس طرح وہ اپنی خدمات سر انجام دے رہا ہے اسی طرح دوسرے اداروں کوبھی کام کرنے کی ضرورت ہے ۔

مزید : ایڈیشن 1