الطاف کے بیان کیخلاف بلوچستان اسمبلی میں قرار دادمنظور ‘ غداری کا مقدمہ چلانے کا مطالبہ

الطاف کے بیان کیخلاف بلوچستان اسمبلی میں قرار دادمنظور ‘ غداری کا مقدمہ ...

کوئٹہ(اے این این) بلوچستان اسمبلی نے ایم کیو ایم کے سربراہ الطاف حسین کیخلاف آرٹیکل چھ کے تحت غداری کا مقدمہ چلانے کا مطالبہ کردیا،ایوان نے ایم کیوایم کے قائد کی تقریر کیخلاف مشترکہ مذمتی قرارداد بھی منظورکرلی جبکہ منظور کی گئی مشترکہ قرارداد میں کہا گیا ہے کہ کراچی میں دہشت گردانہ کارروائیوں میں ایم کیو ایم کے ملوث ہونے کے شواہد موجود ہیں ،اس جماعت پر مکمل پابندی عائد کی جائے ، افواج پاکستان سرحدوں کی محافظ ہے اس کیخلاف نازیبا کلمات کبھی برداشت نہیں کرسکتے ۔ہفتے کے روز بلوچستان اسمبلی کا اجلاس ڈپٹی سپیکر میر عبدالقدوس بزنجو کی صدارت میں منعقد ہوا اجلاس میں صوبائی وزیر داخلہ میرفراز بگٹی نے صوبائی وزراء رحمت صالح بلوچ‘شیخ جعفرخان مندوخیل‘مجیب الرحمن محمد حسنی‘حاجی محمد خان لہڑی‘ارکان اسمبلی انجینئر زمرک خان اچکزئی‘سردار عبدالرحمن کھیتران‘پرنس احمد علی ‘شاہدہ رؤف‘نصراللہ زیرے ‘سید لیاقت آغا ‘حاجی محمد اسلام اور راحیلہ حمید درانی کی جانب سے مذمتی قرارداد پیش کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ ایک لسانی تنظیم کے نام نہاد سربراہ الطاف حسین نے اپنے تقریر میں ملکی ادارں اور خاص طور پر افواج پاکستان کیخلاف ہرزہ سرائی کرتے ہوئے بہت قابل نفرت الفاظ استعمال کیے یہ الفاظ ملک سے بغاؤت کے زمرے میں آتا ہے جس کی جتنی بھی مذمت کیا جائے کم ہے یہ ایوان مرکزی حکومت سے مطالبہ کرتا ہیں کہ ایسی فاشٹ تنظیم ایم کیو ایم پر پابندی لگائی جائے اور الطاف حسین کو ملک لاکر کھلے عام عدالت میں آرٹیکل چھ کے تحت غداری کا مقدمہ چلایا جائے۔

مطالبہ

لاہور(آن لائن)پاکستان تحریک انصاف،مسلم لیگ (ن) نے ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین کی فوج کے خلاف نفرت انگیز تقریرکرنے پرپنجاب اور خیبر پختونخواہ اور سندھ اسمبلیوں میں قرار داد لانے کا فیصلہ کر لیا ہے جبکہ مسلم لیگ (ق) نے سینٹ میں قرارداد مذمت لانے کا فیصلہ کیا ہے ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق پنجاب اسمبلی کے اپوزیشن لیڈر اور تحریک انصاف کے رہنما میاں محمود الرشید نے کہا ہے کہ الطاف حسین نے پاک فوج کے خلاف انتہائی غلط زبان استعمال کی ،الطاف حسین ریاستی اداروں کا مذاق اڑا کر معافی مانگ لیتے ہیں،انہوں نے کہا کہ کل(پیر) کے روز پنجاب اسمبلی کے اجلاس کے موقع پر الطاف حسین کے خلاف قرار داد جمع کرائیں گے۔دوسری جانب وزیراعلیٰ خیبر پختونخواہ نے بھی الطاف حسین کے پاک فوج کے خلاف نازیبا الفاظ کی شدید الفاظ میں مذمت ہے،وزیراعلیٰ نے خیبر پختونخواہ اسمبلی کے آئندہ اجلاس میں قرار داد لانے کا اعلان کر دیا ہے۔ادھرمسلم لیگ (ن) نے بھی خیبر پختونخواہ میں الطاف حسین کے خلاف قرار داد لانے کا فیصلہ کیا ہے، خیبر پختونخواہ میں مسلم لیگ (ن) کے رکن صوبائی اسمبلی سردار حسین نے کہا کہ الطاف حسین کا پاک فوج کے خلاف بیان ملکی وحدت پر حملہ ہے اور بیان کے ذریعے ملک میں انتشار پھیلانے کی کوشش کی ہے،انہوں نے خیبر پختونخواہ اسمبلی کے آئندہ اجلاس میں الطاف حسین کے خلاف اپوزیشن سے ملکر قرار داد جمع کرائیں گے مسلم لیگ (ق) کے سینیٹر کامل علی آغا سینٹ میں الطاف حسین کے بیان کیخلاف مذمتی قرارداد لائینگے ق لیگ کے سربراہ شجاعت حسین نے کامل علی آغا کو قراردد لانے کا ٹاسک دیا ہے۔

مزید : صفحہ اول