جرمنی ، دائیں بازو کی جماعت اسلام مخالف پالیسی کا اعلان کر دیا

جرمنی ، دائیں بازو کی جماعت اسلام مخالف پالیسی کا اعلان کر دیا

 بر لن (آن لائن)جرمنی کی دائیں بازو کی جماعت اے ایف ڈی نے اپنی اسلام مخالف پالیسی کا اعلان کر دیا ہے۔پارٹی کے اجلاس میں اراکین کی جانب سے پالیسی میں میناروں کی تعمیر، اذان دینے اور پورے چہرے کے نقاب پر پابندیاں شامل کی گئی ہیں اور کہا گیا ہے اسلام ’جرمنی کا حصہ نہیں ہے۔ایک رکن نے مقامی سطح پر مکالمے کا مطالبہ کیا تاہم اسے دیگر اراکین کی جانب سے شدید الفاظ میں مسترد کر دیا گیا۔ جرمنی کے شہر سٹٹگرٹ میں دائیں بازو کی جماعت اے ایف ڈی کے اراکین کو کانفرنس میں جانے سے روکنے کی کوشش کے نتیجے میں پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپیں ہوئی تھیں۔ان جھڑپوں کے بعد بائیں بازو کے سینکڑوں مظاہرین کو گرفتار کر لیا گیا تھا۔دوسری جانب ہیکرز کی جانب سے اے ڈی ایف کے دو ہزار سے زائد ارکان کے گھر کے پتے ایک بائیں بازو کی ویب سائٹ پر شائع کر دیے گئے ہیں۔خیال رہے کہ اے ڈی ایف کا قیام تین سال قبل عمل میں آیا تھا اور گذشتہ ماہ ہونے والے مقامی انتخابات میں تین ریاستوں میں کامیابی حاصل کی تھی۔یہ جماعت جرمن جانسلر انگیلا میرکل کی جانب سے گذشتہ برس ہزاروں تارکینِ وطن کی آمد کو تسلیم کییجانے والے فیصلے کے خلاف ہے۔اگلے سال کے عام انتخابات سے قبل پارٹی کے لیے ضروری ہے کہ وہ مشترکہ منشور پر متفق ہو۔ اس کے لیے تجاویز میں جبری ٹیکس اور یورو سے نکل جانے کی تجاویز شامل ہیں مگر پارٹی کے اندر اس حوالے سے تقسیم نظر آتی ہے۔

مزید : عالمی منظر