ریسکیو 1122،ضلعی انتظامیہ کی ممکنہ سیلاب بارشوں کے پش نظر فرضی مشقیں

ریسکیو 1122،ضلعی انتظامیہ کی ممکنہ سیلاب بارشوں کے پش نظر فرضی مشقیں

  

ملتان،وہاڑی،مظفرگڑھ،بہاولپور،راجن پور،بھکر،رحیم یار خان(کرائم رپورٹر،نمائندگان) ملتان سے کرائم رپورٹر کے مطابق پنجا ب گورنمنٹ کی ہدایت پر ریسکیو 1122ملتان نے ممکنہ سیلاب سے نبردآزما ہونے کیلئے دریائے چناب پر فرضی مشقوں کا اہتمام کیا جس میں تمام ادارے محکمہ ہیلتھ ‘ سول (بقیہ نمبر36صفحہ7پر )

ڈیفنس ‘ سوشل ویلفئیر‘ محکمہ زراعت ‘ پاپولیشن ویلفئیر‘ میپکو ‘ لائیوسٹاک‘مقامی این جی اووز اور تمام ٹی ایم اووز نے شرکت کی ۔جس میں ان تمام اداروں میں ایمرجنسی سے متعلق پہلے سے طے شدہ ذمہ داریوں کے بارے اظہار کے طور پر کیمپ لگائے جیسے محکمہ ہیلتھ فیلڈ ہسپتال ‘ محکمہ آبپاشی نے فلڈ کنٹرول روم ‘ واسا نے مون سون کی بارشوں سے نبردازما ہونے کیلئے اپنا پلان آویزاں کیا ہوا تھا۔ڈی او سی زاہد اکرام نے ڈسٹرکٹ ایمر جنسی آفیسر1122ڈاکٹراعجاز انجم کے ساتھ اس علامتی فلڈ کیمپ کا دورہ کیا اور ریسکیو 1122کی عملی مشقوں کا معائنہ کیا جس میں ریسکیو1122کے اہلکاروں نے فرضی سیلاب زدگان کو بذربعہ کشتی محفوظ مقام پر منتقل کرنے کے ساتھ ساتھ اگربغیر کشتی کے کسی کو ریسکیو کرنے پڑے تو اس کی تیاری کے اظہار کے لیے ریسکیورزنے تیراکی کا عملی نمونہ بھی پیش کیا۔ اسی طرح ڈوبے ہوئے شخص کو نکالنے کیلئے ریسکیو 1122کے غوطہ خوروں نے بھی اپنے فن کا مظاہرہ کیا۔کنٹرول روم انچارج ریسکیو1122محمد مدثرضیاء کی ٹیم نے وہاں پر فوری اور ایمرجنسی کنٹرول روم بنایا جسکا براہ راست رابطہ ریسکیو1122کے ضلعی کنٹرول روم کے ساتھ تھا۔ ڈسٹرکٹ ایمرجنسی آفیسرریسکیو1122ڈاکٹراعجاز انجم نے ڈی او سی زاہد اکرام کو بتایا کہ آنے والے موسم میں سیلاب سے متعلق کسی بھی قسم کی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے ہماری تیاریاں مکمل ہیں ریسکیو 1122کے نوجوان ہر دم تیار ہیں اور متاثرین کی ہر قسم کی مدد ریسکیورکی اولین ترجیح ہے۔ڈی او سی زاہد اکرام نے شرکا ء سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اس قسم کی فرضی مشقوں کا مقصد تمام اداروں کا آپس میں باہمی رابطہ اور اپنے آلات کی تیاری اوردرستگی کی تصدیق شامل ہے انہوں نے کہا کہ ریسکیو اہلکا راپنی ذمہ داریاں اور فرائض بخوبی سرانجام دے رہے ہیں اور ریسکیو 1122کا کام قابل ستائش ہے ۔وہاڑیسیبیورو رپورٹ+نما ئندہ خصوصیکے مطابقضلعی انتظامیہ کی طرف سے ممکنہ سیلاب کے خطرہ سے نمٹنے کے لیے ہیڈ اسلام پر دریائے ستلج میں فرضی امدادی مشقیں کی گئیں جس میں محکمہ شہری دفاع، ریسکیو،لائیوسٹاک، محکمہ صحت اور ٹی ایم اے وہاڑی نے شرکت کی اے ڈی سی رانا سلیم احمد نے ای ڈی او زراعت چودھری مشتاق علی کے ہمراہ فرضی مشقوں کے دوران محکموں کی کارکردگی کا مظاہرہ دیکھا انہوں نے تمام متعلقہ ا داروں سے کہا کہ وہ ان مشقوں کے ذریعے اپنی کمزروریوں کا جائزہ لیں اور انہیں دور کرنے کے لیے قدامات کریں اس دوران ڈی او سوشل ویلفےئر رائے اختر اظہر ، ڈی ڈی او زراعت محمد اسماعیل وٹو اور پلان پاکستان کے ڈسٹرکٹ مینیجر عمران جاوید بھی موجود تھے۔مظفرگڑھسے نما ئندہ پاکستان کے مطابقمظفرگڑھ میں ممکنہ سیلاب کے حوالے سے ضلعی انتظامیہ اور ریسکیو1122نے اپنی تیاریاں شروع کردی ہیں،ڈی سی او حافظ شوکت علی کا کہنا ہے کہ متوقع بارشوں کے باعث جولائی میں سیلاب کاخطرہ ہے۔اس موقع پر ریسکیو1122اور ضلعی حکومت مظفرگڑھ کی جانب سے وئیر ہاؤس میں مختلف محکموں کی جانب سے کیمپس بھی لگائے گئے جن کا ڈی سی او مظفرگڑھ حافظ شوکت علی نے معائنہ کیا۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے ڈسٹرکٹ آفیسر ریسکیوکا ڈاکٹرارشاد الحق کا کہنا تھاریسکیو 112کی سیلاب کے حوالے سے تیاریاں مکمل ہیں۔ بہاولپورسے بیورورپورٹ کے مطابق دریائے ستلج کے کنارے ایمپریس پل کے نزدیک سیلاب کی ممکنہ صورتحال سے نبردآزما ہونے کے لئے ریسکیو و ریلیف کی فرضی مشق کا مظاہرہ کیا گیا۔ اس موقع پر ایڈیشنل ڈسٹرکٹ کلکٹر عمرانہ اجمل، اسسٹنٹ کمشنر سٹی راؤ تسلیم اختر، ڈی ایچ او ڈاکٹر سعید اصغر، ای ڈی او زراعت چوہدری تنویر احمد، ڈپٹی ڈائریکٹر تعلقات عامہ ناصر حمید سمیت پولیس، ایلیٹ فورس، سول ڈیفنس، محکمہ انہار اور ریسکیو 1122کے افسران و جوان موجود تھے۔فرضی مشق کے دوران متعلقہ محکموں کی استعداد کار اور ناگہانی صورتحال میں ریسکیو و ریلیف کی مشق کا عملی مظاہرہ و معائنہ کیا گیا۔ ایڈیشنل ڈسٹرکٹ کلکٹر عمرانہ اجمل نے کہا کہ مون سون کی بارشوں کے پیش نظر دریائی پٹی میں پانی کے بہاؤ سے پیش آمد صورتحال سے نبردآزما ہونے کے لئے تمام محکمے چوکس اور تیارر ہیں۔راجن پورسے ڈسٹرکٹ رپورٹر،نامہ نگارکے مطابق’’ممکنہ سیلاب کے پیش نظر ریسکیو1122،سول ڈیفنس اورپولیس کی دریائے سندھ کے کنارے کوٹ مٹھن کے مقام پر جوائنٹ موک ایکسر سائز کا انعقادکیا گیا‘‘قدرتی آفات میں تمام ادارے مل کر کام کریں تاکہ بہت بڑے نقصان سے بچا جا سکے ۔ان خیالات کا اظہار اے ڈی سی عبد الفتح ہولیو نے موک ایکسر سائز کی نگرانی کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر ڈاکٹر محمد اسلم ڈسٹرکٹ ایمر جنسی آفیسر ریسکیو 1122 نے کہا ہے کہ یہ مشترکہ مشقیں پانچ دن جاری رہیں گی جس سے لوگوں کو آگاہی حاصل ہو گی۔اس موقع پر ایمرجنسی آفیسر ریسکیو 1122سعید احمد،کمیونٹی سیفٹی آفیسر ریسکیو 1122رانا محمد یامین،پی ڈی ایم اے کے نمائندہ محمد عرفان،سول ڈیفنس آفیسر عقیل گل،پولیس آفیسرز ،سماجی تنظیموں کے نمائندہ گان اور دیگر متعلقہ افسران و اہلکاران نے شرکت کی۔اس موقع پر کمیونٹی سیفٹی آفیسر ریسکیو 1122رانا محمد یامین نے بتایا کہ مشقوں کا مقصد ریسکیورز اور رضاکاروں کی تربیت کر کے ان کو الرٹ رکھنا ہے۔ان مشقوں کی نگرانی کمیونٹی سیفٹی آفیسر ریسکیو 1122رانا محمد یامین نے کی۔بھکرسے نامہ نگارکے مطابق ڈسٹرکٹ فلڈ سیفٹی اینڈ ریلیف پلان سے متعلقہ محکموں کی استعداد کا ر اور تیاری کو جانچنے کیلئے فلڈ موک ایکسر سائز کا انعقاد داجل چیک پو سٹ کے قریب کیا گیا جس کا اہتمام ریسکیو 1122 کے مقامی یونٹ نے دیگر ضلعی محکموں اور دوآبہ فاؤنڈیشن کے اشتراک سے کیا تھا ۔ایڈیشنل ڈسٹرکٹ کلکٹر (اے ڈی سی ) حافظ احمد طارق نے موک ایکسر سائز کا معائنہ کیا جس کے دوران انہوں نے پی ڈی ایم اے کے نمایندہ کے ہمراہ ریسکیو 1122 ،لائیو سٹاک ،ہیلتھ ،دوآبہ فاؤنڈیشن ،سوشل ویلفئیر اور ٹی ایم اے کی طرف سے قائم کئے گئے کیمپوں میں امدادی کارروائیوں کے سلسلہ میں آزمائشی انتظامات کا جائزہ لیا جبکہ جھیل میں ریسکیو 1122 کی امدادی ایکسر سائز بھی دیکھی اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے اے ڈی سی حافظ احمد طارق نے فلڈموک ایکسر سائز کے انعقاد پر اطمینان کا اظہار کیا۔رحیم یار خان سیبیورو نیوز کے مطابق ایمرجنسی آفیسر ڈاکٹرعادل رحمان کی سربراہی میں فلڈ ڈزاسٹرکی تیاری کے حوالے سے واٹر بوٹنگ اور سویمنگ کی مشقیں کی گئیں۔ ریسکیو ترجمان عدنان شبیر کے مطابق ڈسٹرکٹ ایمرجنسی آفیسر ڈاکٹر عبدالستار بابر کی ہدایات پر ایمرجنسی آفیسر ڈاکٹر عادل رحمان کی سربراہی میں ہیڈ امین گڑھ صادق برانچ نہر میں ریسکیو 1122کے مکمل سٹاف،محکمہ ریونیو، سول ڈیفنس اور محکمہ صحت کے اہل کاروں نے فلڈ آنے سے پہلے ایمرجنسی سروسز کی مشترکہ مشقیں کیں۔ان مشقوں میں واٹر بوٹس کا گہرے پانی میں استعمال،پانی یا سیلاب میں پھنسے افراد کو بروقت ریسکیو کرکے محفوظ جگہوں میں منتقل کرنا،زخمی افراد کو ابتدائی طبی امداد دینا،میڈیکل کے مریضوں کو ریسکیو انفارمیشن ڈیسک سے رجسٹریشن ڈیسک منتقل کرنا وہاں سے متعلقہ میڈیکل کیمپ میں شفٹ کرنا شامل تھا۔اس کے علاوہ ریسکیورز کے سویمنگ ٹیسٹ لیے گئے بہترین سویمرز کو سراہتے ہوئے انہیں اے کیٹیگری میں شامل کرلیا گیا ۔اے ڈی سی رحیم یارخان شوذب سعید نے ان تمام مشقوں کو دیکھا اور بہت سراہا ۔مشقوں کے حوالے سے ایمرجنسی آفیسر ڈاکٹر عادل رحمان نے مکمل بریف کیا کہ کس طرح لوگوں کو دریا سے نکالا جاتا ہے انہیں محفوظ جگہوں تک پہنچایا جاتا ہے۔آخر میں اے ڈی سی شوذب سعید نے تمام محکموں سے فلڈ کے دوران آنے والی مشکلات بارے پوچھا اور ان سب مسائل اور مشکلات کو نوٹ کیا گیا ۔

قرآم خوانی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -