خیبر پختونخوا اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے انتظامیہ کا ایک اجلاس

خیبر پختونخوا اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے انتظامیہ کا ایک اجلاس

پشاور( پاکستان نیوز)خیبر پختونخوا اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے انتظامیہ کا ایک اجلاس چیئرمین اور ممبر صوبائی اسمبلی بخت بیدارکی زیر صدارت اسمبلی کے کانفرنس رو م میں منعقد ہوا۔اجلاس میں ممبران صوبائی اسمبلی محترمہ رفیہ حنا،محترمہ راشدہ رفعت،افتخار علی مشوانی،صاحبزادہ ثناء اللہ،ادریس خان کے علاوہ محکمہ انتظامیہ اور دیگر متعلقہ محکموں کے افسران نے شرکت کی۔اجلاس میں سرکاری گاڑیوں کی نیلامی کے طریقہ کار ،اب تک نیلام کی گئی گاڑیوں کی تعداد ،نیلامی کے وقت گاڑیوں کی حالت پر غور و خوض کیا گیا۔کمیٹی نے محکمہ انتظامیہ کو تلقین کی کہ وہ سرکاری گاڑیوں کی نیلامی کو مزید شفاف بنانے کے لئے اقدامات کریں ۔کمیٹی نے محکمہ انتظامیہ اور دیگر محکموں سے نیلامی کیلئے حاصل کی گئی گاڑیوں کی تعداد اور مختلف محکموں کے زیر استعمال گاڑیوں کی تعداد کے بارے میں محکمہ انتظامیہ کو ہدایت کی کہ وہ آئندہ اجلاس میں اس سلسلے میں مکمل تفصیلات فراہم کریں جبکہ کمیٹی نے گاڑیوں کی مزیدجانچ پڑتال کے لئے محکمہ انتظامیہ کی ذیلی کمیٹی تشکیل دینے کی ہدایت بھی جاری کی تاکہ گاڑیوں کے بارے میں مکمل رپورٹ کمیٹی کو پیش کی جاسکے۔کمیٹی کے محرک ایم پی اے افتخار علی مشوانی کے سوال پر جوضلع مردان میں پی سی ون کے تحت مساجد پر کام شروع کیا گیا تھا جس میں مذکورہ رقم پراجیکٹ کیڈر کے تحت بغیر کسی قواعد کے تقسیم کی گئی تھی پر وزیر اعلیٰ نے رقوم کے لئے انکوائری انٹی کرپشن کے حوالے کی تھی پر کمیٹی نے آئندہ اجلاس میں ڈائریکٹر انٹی کرپشن اور خرد برد رقوم کیلئے سپیشل آڈٹ کرانے کے احکامات جاری کئے۔کمیٹی نے سرکاری ملازمین کو گھروں کی الاٹمنٹ اور موزوں سرکاری ملازمین کو گھروں کی الاٹمنٹ بارے تبادلہ خیال کیا۔ اسی طرح سرکاری ملازمین کیلئے پنشن سہولیات کی فراہمی کے بارے میں بھی غور و خوض کیا گیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر