صوبائی دارالحکومت ،لینڈ مافیا اور پٹواریوں کی ملی بھگت ،اربوں روپے کا فراڈ ،پراپرٹی ریکارڈ غائب

صوبائی دارالحکومت ،لینڈ مافیا اور پٹواریوں کی ملی بھگت ،اربوں روپے کا فراڈ ...

لاہور (عامر بٹ سے)صوبائی دارلحکومت میں لینڈ مافیا اور پٹواریوں کی ملی بھگت سے اربوں روپے کے فراڈ کا انکشاف،لوگوں کی اربوں روپے کی پراپرٹی کا ریکارڈ غائب کروا دیا گیا،جلد انتقالات ،پرت سرکار،روزنامچہ جات،مثاویاں، عکس تتمہ جات سمیت اہم ریونیوریکارڈ چوری ہونا معمول بن گیا،ڈسٹرکٹ ایڈمنسٹریشن لاہور نے فراڈیوں کے خلاف کارروائی کی بجائے انہیں کھلی چھٹی دے دی،تحصیل کلکٹر اور ڈسٹرکٹ کلکٹر ریکارڈ کی گمشدگی کے حوالے سے لاعلمی کا اظہار کرکے اپنا دامن بچانے میں مصروف،ریونیو ریکارڈ کی سیفٹی کے لئے خاطر خواہ انتظامات کا فقدان ،محکمہ مال کی پانچوں تحصیلوں کے تھانوں میں ریکارڈ کی گمشدگی کے حوالے سے متعدد مقدمات کے انداراج کے باوجود کوئی کارروائی عمل میں نہ لائی جاسکی۔ریکارڈ کے چوری اور غائب کروانے میں ملوث ریونیو سٹاف کو جیل کی ہوا کھانی پڑے گی۔ڈسٹرکٹ ایڈمنسٹریشن ترجمان۔معلومات کے مطابق ضلع لاہور میں قبضہ مافیا اور لینڈ مافیا نے محکمہ مال کے پٹواریوں ا ور ریونیوافسران کے ساز باز کرکے اربوں روپے کے فراڈ کرنے کی بنیاد رکھتے ہوئے باقاعدہ ایک سازش کے تحت محکمہ مال لاہور کی پانچوں تحصیلوں میں واقع مختلف موضع جات سے ناصرف ریکارڈ غائب کروا دیا ہے بلکہ ریکارڈ کی گمشدگی اور چوری لے حوالے سے متعدد تھانوں میں مقدمات بھی درج کروائے گئے ہیں۔ ذرائع سے حاصل ہونے والی معلومات کے مطابق موضع جھلکے میں پٹواری حلقہ محمد سروس سے گن پوائنٹ پر مسلح افراد نے ریونیو کا اہم ترین ریکارڈ چھین لیا تھا جس میں جلد انتقالات، روزنامچہ جات سمیت دیگر اہم ریونیو ریکارڈ بھی شامل تھا۔ بعد ازاں نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ تو درج کروا دیا گیا مگر اس معاملے کی باریک بینی اور سنجیدگی سے نہ تو کوئی تحقیقات کی گئی اور نہ ہی فالو اپ کیا گیا۔ اسی طرح موضع ننگر میں بھی چند بااثر افراد نے نہ صرف اہم ریونیو ریکارڈ اٹھا لیا بلکہ پٹوار سرکل کو بھی آگ لگا دی جس کی اطلاع رات گئے پٹواری حلقہ شاہد رشید نے متعلقہ تھانہ کوٹ لکھپت میں پولیس کو کر دی اور اپنے اعلیٰ افسران کو بھی اس ضمن میں آگاہی دے کر اپنے دامن کو صاف کر لیا۔ بعد ازاں مذکورہ پٹواری نے متعلقہ تھانے میں ایف آئی آر درج کرواتے ہوئے نامزد ملزمان کی نشاندہی بھی کی مگر تاحال اس کیس میں ابھی تک صحیح معنوں میں تحقیقات نہیں کی گئی ہیں ۔مذکورہ بالا تمام کارروائیوں میں محکمہ ریونیو کو ناصرف اہم ریکارڈ سے محروم ہونا پڑا بلکہ لینڈ مافیا کو بھی اس کارروائی کے بعد کروڑوں روپے کا فائدہ حاصل ہو۔ اس کے علاوہ موضع کاہنہ میں پٹواری محمد شوکت اور اسلم گجر کی تعیناتی کے دوران صوبائی حکومت سے وابستہ ریونیو ریکارڈ کی جلد انتقالات، روزنامچہ جات اور مساویاں غائب کروا دی گئی تھیں جن کی تحقیقات بھی کاغذی کارروائی تک محدود رہی ہیں۔ آج تک موضع کاہنہ میں ان گمشدہ جلدوں کی وجہ سے ہزاروں شہری متاثر ہو چکے ہیں۔ اربوں روپے کے فراڈ کرنے کی غرض سے موضع نیاز بیگ سے بھی چھتیس سے زائد جلد انتقالات، رجسٹر ،پرت سرکار اور مساویاں عکس شجرہ سمیت اہم اور بنیادی ریونیو ریکارڈ بھی پٹواریوں سے مقامی لینڈ مافیا نے چھین کر ضائع کر دیا۔ اس ضمن میں پٹواری قاسم شاہ، شبیر احمد، مقبول احمد، انجم مختار، مسعود احمد سمیت دیگروں کے خلاف کاغذی تحقیقات عمل میں لائی گئی۔ جن کا نتیجہ صفر سے آگے نہ بڑھ سکا ہے ۔قابل ذکر بات تو یہ ہے کہ ان جلدوں کو غائب کرنے والے مافیا نے اپنا کام مکمل کرنے کے بعد ان جلدوں میں سے جعلی انتقالات کے سینکڑوں صفحات شامل کروا دئیے ہیں۔ چھ سے زائد جلدیں انتقالات کو پارسل کرتے ہوئے قصور سے لاہور بھجوا دیا جن میں سینکڑوں جعلی انتقالات کی نشاندہی ہونے کے باوجود انہیں موضع نیاز بیگ کے پٹوار خانے میں ہی رکھا گیا ہے جہاں بیع در بیع انتقالات درج کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ اس کے علاوہ موضع کوڑے اور مزنگ سے بھی روزنامچہ جات اور جلد انتقالات کے رجسٹر چوری ہو چکے ہیں موضع آرائیاں، موضع مل، موضع ہربنس پورہ، جاہمن، کھاڑک، چرڑ، رائیونڈ، اچھرہ، اجودھیہ پور، باگڑیاں، ساندہ کلاں، شاہدرہ، چوہنگ، گوہاوا، چوہنگ خورد کیراں، امرسدھو سمیت سو سے زائد ایسے موضع جات ہیں جن میں سے جمع بندیاں، جلد انتقالات، روزنامچہ جات، مساویاں، عکس تتمہ، سمیت دیگر ریونیو ریکارڈ وقفے وقفے سے غائب کروایا گیا ہے۔ محکمہ مال کے اعلیٰ افسران کی عدم توجہ کے باعث یہ سلسلہ اب بھی جاری ہے اس کے علاوہ ہزاروں انتقالات کے پرت سرکار بھی ریونیو ریکارڈ سے غائب ہو چکے ہیں جن کی وجہ سے شہریوں کی بڑی تعداد کی جائیدادیں بھی غیر محفوظ ہیں مزید انکشاف ہوا ہے کہ محکمہ مال کے اعلیٰ افسران ضلع لاہور کے پٹوار خانوں سے گم ہونے والے ریکارڈ سے بھی ناواقف ہیں اور اس معاملے میں لاعلمی کا اظہار کر رہے ہیں ۔دوسری طرف ڈسٹرکٹ ایڈمنسٹریشن لاہور کے ترجمان نے کہا ہے کہ یہ ایک سنجیدہ ایشو ہے جس پر انتہائی سنجیدگی سے کارروائی کررہے ہیں ۔ یہ تاثر غلط ہے کہ کوئی کارروئی نہ کی جارہی ہے بلکہ مرحلہ وار ایکشن لے رہیں ہیں ۔اتنے سارے ایشوز کو ایک ساتھ ہینڈل کرنا مشکل ہے اسی لئے مرحلہ وار کارروائی کرکے ذمہ داران کا تعین کرکے قانونی کارروائی کررہے ہیں ۔

لینڈ مافیا

مزید : علاقائی