سعودی عرب کا وژن 2030ء انتہائی اہمیت کا حامل ، عالمی بینک

سعودی عرب کا وژن 2030ء انتہائی اہمیت کا حامل ، عالمی بینک

جدہ (بیورو رپورٹ) عالمی بینک کے ایک ذیلی مالیاتی ادارے نے کہا ہے کہ سعودی عرب کا وژن 2030ء انتہائی اہمیت کا حامل ہے، سعودی عرب کی معیشت مسلسل ترقی کررہی ہے۔ 2008ء سے 2016ء تک معاشی ترقی کا جائزہ لیا جائے تو معلوم ہوگا کہ ریال کی حقیقی قدر میں 35 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ وژن 2030ء کے باعث ترقی کی رفتار میں اضافہ ہوگا۔ رپورٹ میں کہا گیا کہ سعودی ریال کو امریکی ڈالر سے مربوط کرنے کی وجہ سے ریال کی حقیقی قیمت کا اندازہ نہیں ہورہا۔ یہ ربط نہ ہوتا تو سعودی ریال کی موجودہ قیمت میں 33فیصد تک اضافہ ہوتا۔ دوسری طرف مدینہ منورہ میں چیمبر آف مرس کے سربراہ منیر ناصر نے کہا کہ وژن 2030ء میں سعودی عرب آنے والے معتمرین کی تعداد 30 ملین تک پہنچ جائے گی۔ ایک اندازے کے مطابق سعودی عرب میں قیام کے دوران ایک معتمر مجموعی طور پر 10 ہزار ریال خرچ کرتا ہے تو اس مجموعی طور پر 30 بلین ریال خرچ کریں گے۔ اس حساب سے کل اخراجات کا مدینہ منورہ کا حصہ 160 بلین ریال ہوگا۔ یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ عالمی تجارت کا 30 فیصد حصہ سعودی عرب سے گزرتا ہے۔

مزید : علاقائی