فلم مالک پر پابندی کیخلاف درخواستوں پر وفاقی حکومت کو 17مئی کیلئے نوٹس جاری

فلم مالک پر پابندی کیخلاف درخواستوں پر وفاقی حکومت کو 17مئی کیلئے نوٹس جاری

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے فلم مالک پر پابندی کے خلاف درخواستوں پر وفاقی حکومت کو 17مئی کے لئے نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا ہے۔جسٹس شمس محمود مرزا نے پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر میاں محمودالرشید اور مقامی شہری منیراحمد کی ایک ہی نوعیت کی الگ الگ درخواستوں پر سماعت کی۔ درخواست گزاروں کے وکلاء نے موقف اختیار کیا کہ18 ویں ترمیم کے بعد وفاقی حکومت کو فلم کی نمائش پر پابندی کا اختیار نہیں ہے ،فلم میں موجودہ حالات کی عکاسی کی گئی ہے، موشن پکچر آرڈیننس 1969 کی سیکشن 8 کے مطابق شکایت موصول ہونے پر ہی فلم کی نمائش پر پابندی لگائی جا سکتی ہے،چیئرمین سنسر بورڈ نے پہلے فلم مالک کا سنسر سرٹیفکیٹ جاری کیا، بدنیتی کی بنیاد پر کسی قانونی جواز کے بغیر فلم پر پا ندی عائد کردی گئی، وزارت اطلاعات کی جانب سے جاری کیا گیا پابندی کا نوٹی فیکیشن غیر قانونی ہے، فلم مالک، اسلام اور ملکی خود مختاری کے خلاف نہیں ہے، وکلاء نے بتایا کہ فلم میں کوئی ایسی چیز نہیں دکھائی دی جس سے معاشرے میں انتشار پیدا ہو۔ وکلاء نے استدعا کی کہ فلم پر عائد پابندی کو کالعدم قرار دیا جائے۔ عدالت نے پاکستانی فلم مالک پر پابندی کے خلاف درخواستوں پر وفاقی حکومت کو 17مئی کے لئے نوٹس جاری کر دیئے ہیں۔

نوٹس جاری

مزید :

صفحہ آخر -