پانامہ لیکس تحقیقات، ٹی او آرز پر الیکشن کمیشن بھی متحرک ہو گا، قرض معافی کرانے والے رکن کو نشست سے ہاتھ دھونا پڑے گا

پانامہ لیکس تحقیقات، ٹی او آرز پر الیکشن کمیشن بھی متحرک ہو گا، قرض معافی ...
پانامہ لیکس تحقیقات، ٹی او آرز پر الیکشن کمیشن بھی متحرک ہو گا، قرض معافی کرانے والے رکن کو نشست سے ہاتھ دھونا پڑے گا

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) پانامہ لیکس کے بعد قرضوں کی معافی کے معاملے پر بھی سیاستدانوں کی گردنوں پر تلوار لٹکنے لگی ہے کیونکہ پانامہ لیکس تحقیقات کے حوالے سے ٹی او آرز پر الیکشن کمیشن بھی متحرک ہو گا۔

نجی ٹی وی دنیا نیوز کے مطابق الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ 20 لاکھ کا قرض معاف کرانے یا نادہندہ رکن کو نشست سے ہاتھ دھونا پڑے گا جبکہ بیوی اور زیر کفالت بچوں کے نام پر قرض معاف کرانے والا بھی رکن پارلیمینٹ نہیں رہ سکتا ۔ الیکشن کمیشن کے مطابق قرض معافی کے ثبوت ملنے پر ارکان کے خلاف کارروائی ہو گی۔ نااہلی کے معاملے پر سپیکر قومی اسمبلی یا چیئرمین سینیٹ کو 30 روز میں ریفرنس بھجوانا ہوتا ہے جبکہ 30 روز میں ریفرنس نہ بھجوانے پر معاملہ الیکشن کمیشن کے پاس آ جاتا ہے۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -