بظاہر ایک دوسرے کے سب سے بڑے مخالف، بشارالاسد اور داعش میں کیا تعلق ہے؟ خفیہ دستاویزات میں تہلکہ خیز انکشاف سامنے آگیا

بظاہر ایک دوسرے کے سب سے بڑے مخالف، بشارالاسد اور داعش میں کیا تعلق ہے؟ خفیہ ...
بظاہر ایک دوسرے کے سب سے بڑے مخالف، بشارالاسد اور داعش میں کیا تعلق ہے؟ خفیہ دستاویزات میں تہلکہ خیز انکشاف سامنے آگیا

  

دمشق(مانیٹرنگ ڈیسک)شام میں جاری جنگ ایک حیرت کدہ بنی ہوئی ہے۔ کون کس کا دوست ہے اور کون کس کا دشمن، کچھ سمجھ نہیں آ رہی۔ اگر حقیقت پسندانہ بات کہی جائے تو شام کی جنگ کے فریقین اپنے اپنے مفادات کی جنگ لڑ رہے ہیں۔ کسی کو بشارالاسد سے ہمدردی ہے نہ داعش کا خاتمہ ان کا مطمع¿ نظر۔شام کی جنگ میں امریکہ، اس کے اتحادیوں اور روس و دیگر ممالک کی دوغلی پالیسی تو پہلے ہی عیاں تھی مگر اب ایک ایسا انکشاف ہوا ہے جس پر پوری دنیا انگشت بدنداں ہے۔ برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق ایسی دستاویزات منظرعام پر آ گئی ہیں جن سے انکشاف ہوا ہے کہ شام کی لڑائی جن دو بنیادی فریقین میں ہو رہی ہے وہی بعض معاملات میں ایک دوسرے سے سازباز کر رہے ہیں اور باہمی تعاون سے معاملات چلا رہے ہیں، یعنی داعش اور بشارالاسد کی شامی حکومت۔

منظرعام پر آنے والی دستاویزات سے انکشاف ہوا ہے کہ شام کے شہر پالمیرا (Palmyra) کے معاملے پر داعش اور شامی حکومت ایک دوسرے سے مل کر کام کر رہے ہیں۔پالمیرا شہر پر ایک سال قبل داعش نے قبضہ کیا تھا جسے رواں سال مارچ میں شام کی حکومتی افواج نے واگزار کروایا ہے۔ اب بھی شہر کے جزوی حصے داعش کے کنٹرول میں ہیں۔ اس کے علاوہ داعش اور شامی حکومت تیل کی تجارت کے معاملے پر بھی ایک دوسرے سے تعاون کرر ہے ہیں۔رپورٹ کے مطابق منظرعام پر آنے والی یہ دستاویزات دراصل وہ خطوط ہیں جو داعش اور شامی حکومت نے ایک دوسرے کو لکھے۔ اس کے علاوہ دیگر کاغذات بھی شامل ہیں۔ مجموعی طور پر ان دستاویزات کی تعداد 22ہزار کے لگ بھگ ہے۔

رپورٹ کے مطابق ایک خط میں داعش نے شامی حکومت کو لکھا ہے کہ ”پالمیرا شہر کے اندر اور باہر نصب بھاری توپ خانہ اور اینٹی ایئرکرافٹ مشین گنیں ہٹا لو۔شامی حکومت کے لکھے گئے ایک خط میں داعش سے کہا گیا ہے کہ ”ہمارے ڈرائیور کو اپنی تمام چیک پوسٹس سے گزر کر بارڈر تک پہنچنے دو جو تیل فروخت کرنے کے لیے لیجا رہا ہے۔“ان دستاویزات سے یہ بھی انکشاف ہوا ہے کہ مارچ میں پالمیرا پر شامی فوج کے حملے سے قبل داعش کے شدت پسندوں کے وہاں سے نکلنے کے انتظامات بھی کیے گئے تھے۔“ رپورٹ کے مطابق داعش سے منحرف ہونے والے ایک شدت پسند نے سکائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے تصدیق کی ہے کہ داعش اور شامی حکومت مختلف معاملات میں ایک دوسرے سے تعاون کرتے رہتے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -